Results 1 to 2 of 2

Thread: اب کے سال پونم میں

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default اب کے سال پونم میں


    اب کے سال پونم میں جب تو آئے گی ملنے
    ہم نے سوچ رکھا ہے رات یوں گزاریں گے
    دھڑکنیں بچھادیں گے شوخ تیرے قدموں پہ
    ہم نگاہوں سے تیری آرتی اتاریں گے
    تو کہ آج قاتل ہے، پھر بھی راحتِ دل ہے
    زہر کی ندی ہے تو، پھر بھی قیمتی ہے تو
    پست حوصلے والے تیرا ساتھ کیا دیں گے
    زندگی ادھر آجا ہم تجھے گزاریں گے
    آہنی کلیجے کو زخم کی ضرورت ہے
    انگلیوں سے جو ٹپکے اس لہو کی حاجت ہے
    آپ زلف جاناں کے خم سنواریئے صاحب
    زندگی کی زلفوں کو آپ کیا سنواریں گے
    ہم تو وقت ہیں، پل ہیں، تیزگام گھڑیاں ہیں
    بے قرار لمحے ہیں، بے تکان صدیاں ہیں
    کوئی ساتھ میں اپنے آئے یا نہیں آئے
    جو ملے گا رستے میں، ہم اسے پکاریں گے
    (ناصر کاظمی)
    1 - اب کے سال پونم میں

  2. #2
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default

    Very Nice
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •