Results 1 to 2 of 2

Thread: کبھی کہا نہ کسی سے ترے فسانے کو

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default کبھی کہا نہ کسی سے ترے فسانے کو

    کبھی کہا نہ کسی سے ترے فسانے کو
    نہ جانے کیسے خبر ہوگئی زمانے کو
    دعا بہار کی مانگی تو اتنے پھول کھلے
    کہیں جگہ نہ رہی میرے آشیانے کو
    مری لحد پہ پتنگوں کا خون ہوتا ہے
    حضور شمع نہ لایا کریں جلانے کو
    سنا ہے غیر کی محفل میں تم نہ جاؤگے
    کہو تو آج سجالوں غریب خانے کو
    دبا کے قبر میں سب چل دیئے دعا نہ سلام
    ذرا سی دیر میں کیا ہوگیا زمانے کو
    اب آگے اس میں تمہارا بھی نام آئے گا
    جو حکم ہو تو یہیں چھوڑ دوں فسانے کو
    قمر ذرا بھی نہیں تم کو خوفِ رسوائی
    چلے ہو چاندنی شب میں انہیں منانے کو
    (قمر جلالوی)

    1 - کبھی کہا نہ کسی سے ترے فسانے کو

  2. #2
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default

    Very Nice
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •