Results 1 to 6 of 6

Thread: Winner of Writers Club Competition October 2015

  1. #1
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    836 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    candel Winner of Writers Club Competition October 2015




    Is maah mouzo diya gaya tha "Mohabbat"
    4 members ne part lia
    or sub ne bhot acha likha
    faisla karna mere liye kafi muskil hogaya tha...!!!

    winner hain



    *resham*



    inki tehrer yeh thi...

    محبت
    اللہ عزوجل نے محبت کی پاکیزی اور طاہرت کی سمجھ ہمیں بخشی ہے ۔ محبت ایک عظیم نعمت ہے ۔ چاہے اس کہ کئی پہلو ہو ۔محبت باطنی ہو یا ظاہری ہومعنوی
    ہو یا غیر معنوی ہو ۔اس کا ہر لفظ محبت سے شروع ہوتا ہے اور احساس کی رداء میں اترتا ہے ۔ یہ پاک پوشیدہ لباس میں اپنی علامتوں کو محفوظ رکھتی ہے یہ محبوب کی اطاعت کا پختہ ارادہ رکھتی ہےاور ملامت کا سر کچل دیتی ہے۔یہ تلخ ازمائش سے بھی لطف آفروز ہوکر بڑھتی ہے۔یہ ایک پاک جذبہء ہے جو دلوں میں گھر کرتا ہے ۔ اس کی علامتیں بہت ہےیہ محافظ بھی ہے تو یہ رعب و جلال بھی رکھتی ہیں یہ تحفوں کے وسائل دیتی ہوئی دھوکوں کی دلائل سے وابسطہ ہوجاتی ہے ۔ یہ آج کہ مجتمع کی ایسی کتاب ہے جسے ہر کوئی پڑھتا ہے ۔ اس کی سمجھ واضح ہے ۔محبت کی نا کوئی زباں ہے نا اس کا کوئی بیاں ہے ۔ یہ مختلف اشخاص ہو یا مختلف اوطان میں رہنے والے ہو ۔ یہ اپنا راستہ خود چن لیتی ہے ۔ سرحدوں کو چیرتی ہوئی اپنا پیغام خود دلوں تک پہنچا دیتی ہے ۔ اس پر لکھنے کی ابتداء تو ہے مگر اسکے الفاظ کی کوئی انتہا نہیں ۔ قاصر ہونگی چاہنے والوں کی قلم ۔جو لفظَ محبت کو اختتمام دے ۔ یہ آئینہ کی طرح شفاف اور نازک تو چٹانوں کی طرح مظبوط بھی ہیں، یہ دورِ جہالت کی مخالفت بھی کرتی آئی ہے ، جہاں معاشرے میں
    عشق اور معشوق ک پر جھگڑا اور بحث و ،مباحثہ ومخالفت آج تک رہی ہیں۔اور انھیں زنجیروںمیں جکڑا دیا جاتا تھا اور تحہ خانوں میں قید کردیا جاتا تھا۔ محبت نے ہر دور میں اپنی مثال قائم کی ہے ۔ عاشق مزاجی نے دل لگی کو بھی محبت نام دیا گیا جس میں منافقت والا عشق اپنا کردار انجام دیتا ہے ۔ محبت خاندانی ماحول میں رسوا ہوئی تو گھرکی عزت وشرف کے لئے بھی قرباں ہوئی ۔دل فریبیوں نے اس کے افسانے بنائے اور دشمنوں نے جسارت کرکے اس کی عصمت کو بھی للکارا۔ اس کی مخالفت اور صراحت کے دوترازو بنے۔ یہ مشکوک کی نظر میں بھی رہی اور یہ اعتبار کی جنگ میں بھی شہید ہوئی ۔ یہ واضح رہی احوال پرستی میں بھی ماور خالفین سے بے خوف لڑتے ہوئے نکل گئی ۔ یہ دورِ معارکہ سے گزرتے
    ہوئے بھی عشق کا رنگ بکھرتی گئی اور محبت کے رنگوں میں عشق مزاجی بے خوف رنگ گئی ۔ محبت کی جاتی ہے سوچ سمجھ کے نہیں یہ اکثر ہوجاتی ہے دلوں میں بنا انٹری داخل ہوکرا مقیم ہوجاتی ہے ۔ عاشقوں نے حامی بھری سچی محبت ہم نے کی ہے ۔ سچی محبت سے ملاحظہ کیجئے اسے دعوی دیا گیا کے یہ سچی محبت ہے ۔ گر ہم محبت کا مفہوم رکھتے ہے تو یہ جھوٹی کب تھی ۔۔؟محبت میں نفرت اور فریب گیری کا بھی مقدمہ چلا ۔ مگر جیت محبت کی ہی ہوئی ۔

    محبت اپنی پسند کا اظہار کرنااور اپنی پسندیدہ چیز کو تسلیم کرنے کا نام ہے ۔جب محبت اپنی امیدوں سے طویل تر شدت سے کرتی ہے تو اسے عشق کہتے ہے۔ اور جب عشق ہوجاتا ہے تو بادشاہ کو بھی فقیر بنا دیتا ہے تخت ہو یا تاج مال ہو یا دولت اپنی جان کی بھی پروہ نہیں کرتا۔محبت کبھی جاہلوں کے لئے عبرت کا سبق بنی تو کبھی عالموں کو بھی جاہل بنا کر گزر گئی ۔ اسے محسوس کرنے والے اس کے درد کی شدت کو سمجھتے ہے ۔یہ ہدایت ہے یہ عدوات بھی ہے ۔ یہ عبرت ہےتو اسی میں غفلت بھی ہے آج کے معاشرے میں اس کی قدر و قیمت سمجھنے والے بہت کم رہ گئے ہیں ، لوگوں نے اس شوخیانہ لباس سمجھ لیا ہے پھر بھی یہ شوق و نظر کو پلٹ دیتی ہے یہ تاریخ کو بدل دیتی ہے ۔ اس کی قوت کا اندازہ نہیں یہ مخلص بنے تو داستان بنا دیں یہ باغی بنے تو آگ لگا دے یہ وفا کریں آشیانے سجا دیں یہ بے وفا بنے تو عاشیقوں کو دشمن بنا دیں ۔ یہ ناکامی کی جنگ ہے تو یہ حصول کے ضد کی غلام بھی ہے
    یہ ایک تمہید ہے جہالت کا سر قلم کرنے کی۔ اس کی کئی مثالیں ہیں اس کے کئی دور ہے یہ معروف بھی ہے یہ مشہور بھی ہے۔اور یہ مخفی بھی ہے ۔یہ پاکیزگی کا سرمایہ ہے تو یہ رسوایئوں کا خزانہ بھی ہیں ۔ یہ رغبت کا اظہار بھی ہے ۔ تو یہ خاموشی کی زباں بھی ہے ان گنت رنگ اس کے انگنت نام اس کے بولوں تو ہر لفظ میں معانی خیز چپ رہوں تو ہر روپ میں اس کا عکس ۔براءت کی زبان یہ تحمتوں کی داستان یہ ۔ رغبت اور دلیلوں کی داستان یہ تو افسانوں کی فنکارہ یہ گر ہم تاریخ ہر غور کریں تو بادشاہوں کی فتح بھی یہ اور ان کی شکست بھی یہ ۔ گر ہم ۔

    زلیخا کی مثال لے توجس نے یوسف علیہ السلام کی محبت میں اپنا حسن اور مال و دولت قربان کر دیا، زلیخا کے پاس ستر اونٹوں کے بوجھ کے برابر جواہر ااور زیور موتی تھے جو عشقِ یوسف میں نثار کر دئیے، جب بھی کوئی یہ کہہ دیتا کہ میں نے یوسف علیہ السلام کو دیکھا ہے تو وہ اسے بیش قیمت ہار دیتی یہاں تک کہ کچھ بھی باقی نہ رہا، اس نے ہر چیز کا نام یوسف رکھ چھوڑا اور فرطِ محبت میں یوسف علیہ السلام کے سوا سب کچھ بھول گئی تھی، جب آسمان کی طرف دیکھتی تو اسے ہر ستارے میں یوسف کا نام نظر آتا تھا۔ اب عشق مزاجی سے عشق ہوا اور عشق حقییقی کی طرف رجوع کرگیا ۔ یہ بات بھی صاف ظاہر ہے ۔
    کہتے ہیں کہ جب زلیخا ایمان لائی اور حضرت یوسف علیہ السلام کی زوجیت میں داخل ہوئی تو سوائے عبادت و ریاضت اور توجہ الی اللہ کے اسے کوئی کام نہ تھا، اگر یوسف علیہ السلام اسے دن کو اپنے پاس بلاتے تو کہتی رات کو آؤں گی اور رات کو بلاتے تو دن کا وعدہ کرتی۔ یوسف علیہ السلام نے فرمایا، زلیخا! تو تو میری محبت میں دیوانی تھی، جواب دیا۔ یہ اس وقت کی بات ہے کہ جب میں آپ کی محبت کی ماسیت سے واقف نہ تھی، اب میں آپ کی محبت کی حقیقت پہچان چکی ہوں اس لئے اب میری محبت میں تمہاری شرکت بھی گوارا نہیں محبت اب عشق حقیقی کی طرف اشارہ دے رہی تھی جو اللہ سے تھا ۔ عشق ہمیشہ دو صنفوں میں در گزر رہا ایک عشق حقیقی اور دوسرا عشق مزاجی ۔ دونوں ہی عشق کی پاکیزی آج بھی عروج پر ہے۔

    عشق کا ذکر خود اللہ تعا لی نے قرآن مجید میں دوگروہوں کے متعلق کیا ہے ایک عورتوں سے عشق اور دوسرا مردبچوں سے عشق پہلے قسم کا معاشقہ حضرت
    یوسف علیہ السلام سے عزیز مصر کی بیوی زلیخا کی والہانہ شیفتگی سے متعلق ہے اور دوسرا عشق کا تعلق قوم لوط سے ہے۔ خدا و نداء کا مفہوم معزن کی اذان میں یہ ہے مقصود ۔ عشق الہی کا معجزہ یہ عشق مزاجی کا جلوہ یہ ۔کیا نام دوگے آپ اسے یہ مقدس بھی یہ رسوا بھی یہ ہے ایثار کی دولت یہ ہے عاشقوں کی اور طاقت ۔ اللہ کے عشق کو لا فانی عشق مقدس اور افضل اور اعظم عشق حقیقی کا ختاب حاصل ہے ۔
    عشق مزاجی میں بھی اس کا اپنا مقام ہے ۔
    اس کے کئی نام اسکے کئی روپ یہ اعتبار کی جاگیر ہے جو نصیب سے ملتی ہے ۔ اس پا نے والا غنی اسے کھونے والا باغی کہلائے ،
    اس کے بنا انسان ادھورا ہے ۔ محبت اہل و عیال میں بھی اپنا ایک اعلی مقام رکھتی ہے ۔ ماں کی محبت کو عالی و اعظم مقام حاصل ہے ، سب کی محبتیں سب کردار میں یہ محفوظ رہی ۔ زوجین میں بھی عشق کی طاہرت موجود اور محفوظ رہی جسکی اعلی مثال ہے نبی کریم ﷺ اور حضرت عائشہ کا عشق ۔ پیش آخر بس یہی کہنا چاہونگی کے اللہ امتِ اسلام کو عشق کو جائز اور حالال رشتوں میں جوڑیں رکھیں ۔ عشق کاصیحیح مفہوم اور اس کی پاکیزہ طہارت کو سمجھنے کی توفیق عطا کرے ۔اور عشق میں ہم مثال بنے نبی کریم ﷺ کی حضرت عائشہ کی ۔ جاائز اور حلال زریعہ سے محبت کرنے والوں کواللہ ملائے، محبت کی ممناعت کو ہٹا کر اس
    کی طاہرت کو محدود اور جائز رشتوں سے حاصل کرنے کی توفیق عطا کرے آمین


    رائٹر ریشم ۔۔
    357osg0 - Winner of Writers Club Competition October 2015
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  2. #2
    Join Date
    Sep 2013
    Location
    Karachi, Pakistan
    Posts
    7,416
    Mentioned
    504 Post(s)
    Tagged
    5438 Thread(s)
    Thanked
    359
    Rep Power
    874041

    Default

    Congratulations @*resham*; bohat hii khobsurat tehreer hay aap ki..
    SetLifeOnFire - Winner of Writers Club Competition October 2015

  3. #3
    Join Date
    Aug 2014
    Location
    Karachi
    Posts
    126
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    12 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    4

    Default

    بہت بہت مبارک ہم بے بھی ہاتھ پاؤں مارے تھے لیکن ہم کامیاب نہ ہوسکے آپ کو بہت بہت مبارک ہو

  4. #4
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jatoi
    Posts
    59,925
    Mentioned
    201 Post(s)
    Tagged
    9827 Thread(s)
    Thanked
    6
    Rep Power
    21474903

    Default










    تیری انگلیاں میرے جسم میںیونہی لمس بن کے گڑی رہیں
    کف کوزه گر میری مان لےمجھے چاک سے نہ اتارنا

  5. #5
    Join Date
    Mar 2010
    Location
    ممہ کہ دل میں
    Posts
    40,298
    Mentioned
    32 Post(s)
    Tagged
    4710 Thread(s)
    Thanked
    4
    Rep Power
    21474884

    Default

    Thank u every 1..

    460303331g 400 w gwebp - Winner of Writers Club Competition October 2015


    thanks main?w600 - Winner of Writers Club Competition October 2015

    thanx 2 - Winner of Writers Club Competition October 2015
    thank you 3 - Winner of Writers Club Competition October 2015

  6. #6
    Join Date
    Sep 2013
    Location
    Mideast
    Posts
    5,905
    Mentioned
    210 Post(s)
    Tagged
    5074 Thread(s)
    Thanked
    176
    Rep Power
    10

    Default

    Way to go

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •