Results 1 to 3 of 3

Thread: لو کو چھونے کی ہوس میں ایک چہرہ جل گیا

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default لو کو چھونے کی ہوس میں ایک چہرہ جل گیا

    لو کو چھونے کی ہوس میں ایک چہرہ جل گیا
    شمع کے اتنے قریب آیا کہ سایا جل گیا
    پیاس کی شدت تھی سیرابی میں صحرا کی طرح
    وہ بدن پانی میں کیا اترا کہ دریا جل گیا
    کیا عجب کار تحیر ہے سپرد نار عشق
    گھر میں جو تھا بچ گیا اور جو نہیں تھا جل گیا
    گرمی دیدار ایسی تھی تماشا گاہ میں
    دیکھنے والوں کی آنکھوں میں تماشا جل گیا
    خود ہی خاکسر کیا اس نے مجھے اور اس کے بعد
    مجھ سے خود ہی پوچھتا ہے بول کیا کیا جل گیا
    صرف یادِ یار باقی رہ گئی دل میں سلیم
    ایک اک کرکے سبھی اسبابِ دنیا جل گیا
    (سلیم کوثر)

    Ghazal2B10 11 14 - لو کو چھونے کی ہوس میں ایک چہرہ جل گیا

  2. #2
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    839 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    Default

    nice
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  3. #3
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default

    Awesome
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •