Results 1 to 2 of 2

Thread: کچھ ایسا اترا میں اس سنگ دل کے شیشے میں

  1. #1
    Join Date
    Mar 2015
    Location
    Karachi
    Posts
    726
    Mentioned
    6 Post(s)
    Tagged
    59 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    3

    Default کچھ ایسا اترا میں اس سنگ دل کے شیشے میں

    کچھ ایسا اترا میں اس سنگ دل کے شیشے میں
    کہ چند سانس بھی آئے نہ اپنے حصے میں
    وہ ایک ایسے سمندر کے روپ میں آیا
    کہ عمر کٹ گئی جس کو عبور کرنے میں
    مجھے خود اپنی طلب کا نہیں ہے اندازہ
    یہ کائنات بھی تھوڑی ہے میرے کاسے میں
    ملی تو ہے مری تنہائیوں کو آزادی
    جڑی ہوئی ہیں کچھ آنکھیں مگر دریچے میں
    غنیم بھی کوئی مجھ کو نظر نہیں آتا
    گھرا ہوا بھی ہوں چاروں طرف سے خطرے میں
    مرا شعور بھی شاید وہ طفل کمسن ہے
    بچھڑ گیا ہے جو گمراہیوں کے میلے میں
    ہنر ہے شاعری شطرنج شوق ہے میرا
    یہ جائیداد مظفر ملی ہے ورثے میں
    (مظفر وارثی)

    Ghazal2B04 12 14 - کچھ ایسا اترا میں اس سنگ دل کے شیشے میں

  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    SAb Kya Dil Mein
    Posts
    11,928
    Mentioned
    79 Post(s)
    Tagged
    2306 Thread(s)
    Thanked
    24
    Rep Power
    21474855

    Default

    very nice


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •