کمپیوٹر ہیکر کے حق میں مظاہرہ
بشکریہ بی بی اردو ڈاٹ کام

t - protest for haker's rights  45273376 45171447 - protest for haker's rights
گیری مکینن کا کہنا ہے کہ وہ اڑن طشتریوں پر معلومات اکھٹا کر رہے تھے برطانوی وزیرِ اعظم گورڈن براؤن سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ کمپیوٹر ہیکر گیری مکینن کو امریکہ کے حوالے کرنے سے روکیں۔
شمالی لندن کے علاقے وڈ گرین کے رہائشی گیری مکینن کو امریکہ کے فوجی کمپوٹرز تک رسائی حاصل کرنے کے جرم میں ستر سال تک قید ہو سکتی ہے۔
مکینن کے حمایتیوں نے ان کے حق میں شمع بردار جلوس نکالا اور ڈاؤننگ سٹریٹ کو دیے گئے ایک خط میں درخواست کی کہ مکینن کا مقدمہ برطانیہ میں چلایا جائے۔
ان کے حمایتیوں کا کہنا ہے کہ مکینن اسپرجر سنڈروم کا شکار ہیں جس میں انسان کی دلچسپی محدود ہو جاتی ہے اور وہ لوگوں سے ملنے ملانے میں مشکل محسوس کرتا ہے۔
گلاسگو میں پیدا ہونے والے مکینن نےدو ہزار ایک اور دو ہزار دو میں ناسا، امریکی بری فوج، بحریہ، فضائیہ کے کمپیوٹر نیٹ ورکس تک رسائی حاصل کر لی تھی۔
مکینن کا کہنا ہے کہ وہ صرف یو ایف او (اڑن طشتریوں) کے متعلق تحقیق کر رہے تھے۔
اگرچہ گزشتہ سال وہ اپنی اپیل دارالامراء تک لے گئے لیکن وہ چھ سال سے جاری اپنی امریکہ کے حوالے کیے جانے کی جنگ ہار گئے۔
انسانی حقوق کی یورپی عدالت نے بھی مکینن کی حمایت سے انکار کر دیا ہے۔
مکینن کے حمایتیوں نے جمعہ کو امریکی سفارتخانے کے سامنے موم بتیاں جلا کر مظاہرہ کیا۔