Results 1 to 3 of 3

Thread: Samundar ka Tamasha

  1. #1
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Google
    Posts
    1,542
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474847

    Default Samundar ka Tamasha

    سمندر کا تماشا کر رہا ہوں
    میں ساحل ہو کے پیاسا مر رہا ہوں

    اگرچہ دل میں صحرا کی تپش ہے
    مگر میں ڈُوبنے سے ڈر رہا ہوں

    میں اپنے گھر کی ہر شے کو جلا کر
    شبستانوں کو روشن کر رہا ہوں

    قفس میں مجھ پہ جو بیتی سو بیتی
    چمن میں بھی شکستہ پر رہا ہوں

    اُٹھے گا حشر کیا محشر میں مجھ پر
    میں خود ہنگامہِ محشر رہا ہوں

    کسا ہے جھوٹ کا پھندا گلے میں
    میں سچائی کی خاطر مر رہا ہوں

    وہی پتھر لگا ہے میرے سر پر
    میں جس پتھر کو سجدے کر رہا ہوں

    مری گردش میں ہر سازِ الم ہے
    جہانِ درد کا محور رہا ہوں

    بنائی جو مرے دستِ ہنر نے
    اُسی تصویر سے اب ڈر رہا ہوں

    تراشے شہر میں نے بخش کیا کیا
    مگر میں خود سدا بے گھر رہا ہوں
    ___________
    Visit My Site on Current Affairs

  2. #2
    Join Date
    Feb 2008
    Posts
    2,051
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    33 Thread(s)
    Thanked
    1
    Rep Power
    4498034

    Default Re: Samundar ka Tamasha

    Assaalm-o-Alikum WR WB

    Nice

    FeamnAllah

  3. #3
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    manchester
    Age
    32
    Posts
    11,319
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    49 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    21474857

    Default Re: Samundar ka Tamasha

    niceeeee

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •