Results 1 to 2 of 2

Thread: ایک میں بھی ہوں کُلہ داروں کے بیچ

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    17,287
    Mentioned
    1510 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5715
    Rep Power
    214771

    New5555 ایک میں بھی ہوں کُلہ داروں کے بیچ


    ایک میں بھی ہوں کُلہ داروں کے بیچ
    میرؔ صاحب کے پرستاروں کے بیچ

    روشنی آدھی اِدھر، آدھی اُدھر
    اک دیا رکھا ہے دیواروں کے بیچ

    میں اکیلی آنکھ تھا کیا دیکھتا
    آئینہ خانے تھے نظاروں کے بیچ

    ہے یقیں مجھ کو کہ سیارے پہ ہوں
    آدمی رہتے ہیں سیاروں کے بیچ

    کھا گیا انساں کو آشوبِ معاش
    آ گئے ہیں شہر بازاروں کے بیچ

    میں فقیر ابنِ فقیر ابنِ فقیر
    اور اسکندر ہوں سرداروں کے بیچ

    اپنی ویرانی کے گوہر رولتا
    رقص میں ہوں اور بازاروں کے بیچ

    کوئی اس کافر کو اس لمحے سنے
    گفتگو کرتا ہے جب یاروں کے بیچ

    اہلِ دل کے درمیاں تھے میرؔ تم
    اب سخن ہے شعبدہ کاروں کے بیچ

    آنکھ والے کو نظر آئے علیمؔ
    اک محمد مصطفے ٰ ساروں کے بیچ




    2gvsho3 - ایک میں بھی ہوں کُلہ داروں کے بیچ

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    17,287
    Mentioned
    1510 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5715
    Rep Power
    214771

    Default Re: ایک میں بھی ہوں کُلہ داروں کے بیچ

    2gvsho3 - ایک میں بھی ہوں کُلہ داروں کے بیچ

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •