Results 1 to 2 of 2

Thread: قربتیں ہوتے ہوئے بھی فاصلوں میں قید ہیں

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    8,230
    Mentioned
    375 Post(s)
    Tagged
    19 Thread(s)
    Thanked
    3152
    Rep Power
    13

    New5555 قربتیں ہوتے ہوئے بھی فاصلوں میں قید ہیں

    قربتیں ہوتے ہوئے بھی فاصلوں میں قید ہیں
    کتنی آزادی سے ہم اپنی حدوں میں قید ہیں

    کون سی آنکھوں میں میرے خواب روشن ہیں ابھی
    کس کی نیندیں ،جو میرے رتجگوں میں قید ہیں

    شہر آبادی سے خالی ہو گئے، خوشبو سے پھول
    اور کتنی خواہشیں ہیں جو دلوں میں قید ہیں

    پاؤں میں رشتوں کی زنجیریں ہیں، دل میں خوف کی
    ایسا لگتا ہے کہ ہم اپنے گھروں میں قید ہیں

    کون یہ پاتال سے ابھرا کنارے پر سلیم
    سر پھری موجیں ابھی تک دائروں میں قید ہیں
    ٭٭٭


    2gvsho3 - قربتیں ہوتے ہوئے بھی فاصلوں میں قید ہیں

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    8,230
    Mentioned
    375 Post(s)
    Tagged
    19 Thread(s)
    Thanked
    3152
    Rep Power
    13

    Default Re: قربتیں ہوتے ہوئے بھی فاصلوں میں قید ہیں

    2gvsho3 - قربتیں ہوتے ہوئے بھی فاصلوں میں قید ہیں

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •