Results 1 to 2 of 2

Thread: اور سب زندگی پہ تہمت ہے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    17,846
    Mentioned
    1534 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5776
    Rep Power
    214771

    New5555 اور سب زندگی پہ تہمت ہے


    اور سب زندگی پہ تہمت ہے
    زندگی آپ اپنی لذت ہے

    میرے اور میرے اس خدا کے بیچ
    ہے اگر لفظ تو 'محبت' ہے

    اک سوال اور اک سوال کے بعد
    انتہا حیرتوں کی حیرت ہے

    عہد شیطان کا خدا کے ساتھ
    سرکشی ہے مگر عبادت ہے

    بھید جانے کوئی مگر کیسے
    یار کو یار سے جو نسبت ہے

    خواب میں ایک شکل تھی میرے
    تُو تو اُس سے بھی خوبصورت ہے

    پہلے مجھ کو تھی اور اب تیری
    میری تنہائی کو ضرورت ہے

    گھٹتا بڑھتا رہا مرا سایہ
    ساتھ چلنے میں کتنی زحمت ہے

    زندگی کو مری ضرورت تھی
    زندگی اب مری ضرورت ہے

    لکھنے والے ہی جان سکتے ہیں
    لفظ لکھنے میں جو قیامت ہے

    تھی کبھی شاعری کمال مرا
    شاعری اب مری کرامت ہے



    2gvsho3 - اور سب زندگی پہ تہمت ہے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    17,846
    Mentioned
    1534 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5776
    Rep Power
    214771

    Default Re: اور سب زندگی پہ تہمت ہے

    2gvsho3 - اور سب زندگی پہ تہمت ہے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •