Results 1 to 2 of 2

Thread: زخمِ احساس اگر ہم بھی دکھانے لگ جائیں

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    12,284
    Mentioned
    867 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    4132
    Rep Power
    17

    New5555 زخمِ احساس اگر ہم بھی دکھانے لگ جائیں

    زخمِ احساس اگر ہم بھی دکھانے لگ جائیں
    شہر کے شہر اسی غم میں ٹھکانے لگ جائیں

    جس کو ہر سانس میں محسوس کیا ہے ہم نے
    ہم اُسے ڈھونڈنے نکلیں تو زمانے لگ جائیں

    اَبر سے اب کے ہواؤں نے یہ سازش کی ہے
    خشک پیڑوں پہ ثمر پھر سے نہ آنے لگ جائیں

    کاش اب کے ترے آنے کی خبر سچی ہو
    ہم مُنڈیروں سے پَرندوں کو اُڑانے لگ جائیں

    شعر کا نشّہ جو اُترے کبھی اک پَل کے لئے
    زندگی ہم بھی ترا قرض چُکانے لگ جائیں

    سوچتے یہ ہیں ترا نام لکھیں آنکھوں پر
    چاہتے یہ ہیں تجھے سب سے چھپانے لگ جائیں

    اِس طرح دن کے اجالے سے ڈرے لوگ سلیمؔ
    شام ہوتے ہی چراغوں کو بجھانے لگ جائیں
    ٭٭٭



    2gvsho3 - زخمِ احساس اگر ہم بھی دکھانے لگ جائیں

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    12,284
    Mentioned
    867 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    4132
    Rep Power
    17

    Default Re: زخمِ احساس اگر ہم بھی دکھانے لگ جائیں

    2gvsho3 - زخمِ احساس اگر ہم بھی دکھانے لگ جائیں

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •