Results 1 to 3 of 3

Thread: Wo Larki Apne Hathon Mai Khuwab Thame Khari Thi

  1. #1
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default Wo Larki Apne Hathon Mai Khuwab Thame Khari Thi

    خواب اور آنکھیں

    تمہاری آنکھیں بہت خوب صورت ہیں
    یہ ایک ایسا جملہ تھا جو اس سے ملنے والا ہر شخص کہتا تھا
    آئینے کی آنکھ بھی اس کو دیکھ کر چمک اٹھتی
    نرگس صدقہ اتارتی،ستارے جھک کر سلامی دیتے
    اور چاند رشک و حیرت سے تکا کرتا
    لیکن۔۔۔۔۔۔۔۔۔اس کی ان خوب صورت آنکھوں میں کبھی کوئی خواب نہیں جگا
    وہ اکثر سوچتی، لوگ رنگ برنگے،پھولوں ،تتلیوں اور جگنوؤں
    کے خواب دیکھتے ہیں
    تو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تو میری آنکھیں ان خوابوں سے محروم کیوں ہیں؟
    نا آشنا کیوں ہیں؟
    اماں! میری آنکھوں میں خواب کیوں نہیں جاگتے!
    وہ اکثر پلکیں جھپک جھپک کر سوال کرتی
    اچھا ہے پگلی! غریبوں کو خواب نہ ہی ستائیں تو بہتر ہے،
    خواہ مخواہ نیند حرام ہوجاتی ہے
    اماں اکتائے ہوئے لہجے میں اسے سمجھاتیں
    کوئی نیند ویند حرام نہیں ہوتی ،آپ تو بس یونہی کہتی رہتی ہیں
    وہ کسی ضدی بچے کی طرح منہ پھلا کر کہتی
    اور پھر ایک دن اچانک اس کی ملاقات خوابوں کے سوداگر سے ہوگئی
    سنو، میں خواب خریدنا چاہتی ہوں
    وہ آنکھوں میں اشتیاق کی معصوم سی چمک لیے "اس" سے مخاطب تھی
    وہ چونک اٹھا،
    لڑکی کی آنکھوں میں جھانکا اور ایک خوب صورت سا خواب،
    اپنی گٹھڑی سے نکال کر تھمادیا
    اِس خواب کی قیمت کیا ہے؟
    سوالیہ نظریں اٹھیں
    تمہاری خوب صورت آنکھیں۔۔۔۔۔۔۔خواب بیچنے والے نے بےنیازی سے کہا
    نہیں نہیں یہ نہیں ہوسکتا
    ایسا ہو بھی کیسے سکتا ہے،میری آنکھیں تو بہت خوب صورت ہیں،
    بہت قیمتی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔انمول
    خواب بھی تو بہت خوب صورت اور قیمتی ہے، انمول
    سوداگر نے جواب دیا
    تم اپنا خواب واپس لےلو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔وہ گھبرا کر بولی
    نہیں اب یہ ممکن نہیں ہے
    اِس سودے میں فروخت کیا ہوا مال واپس نہیں جاتا
    سرد لہجے میں کہا گیا
    تو پھر یوں ہوا کہ سوداگر نے اس کی دونوں آنکھیں لےکر
    اپنی گٹھڑی میں ڈال لیں اور رخصت ہوگیا
    کسی اور گلی،کسی اور نگر کی جانب
    نئے سرے سے خوابوں کا سودا کرنے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اور اب وہ لڑکی اپنے ہاتھوں میں خواب تھامے کھڑی تھی
    لیکن۔۔۔۔۔۔ لیکن دیکھنے کےلیے اس کے پاس خوب صورت آنکھیں نہیں تھیں
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

  2. #2
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    839 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    Default Re: وہ لڑکی اپنے ہاتھوں میں خواب تھامے کھڑی تھ

    khoubsurat
    kuch din pehle kahe parhe ti pata nahi kha..
    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  3. #3
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default Re: وہ لڑکی اپنے ہاتھوں میں خواب تھامے کھڑی تھ

    Aahan Thanks
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •