Results 1 to 5 of 5

Thread: Mulla Naseer Uddin

  1. #1
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default Mulla Naseer Uddin

    ایک دن مُلا کو خیال آیا کہ ساری عمر گدھے کی سواری کی ہے کیوں نہ اب گدھے کو فروخت کر کے کوئی اچھی سی گھوڑی خریدی جائے ۔ چنانچہ انہوں نے ایک گھوڑی کے مالک سے رابطہ کیا اور اس کی گھوڑی مول لینے کی بات کی ، گھوڑی کا مالک رضامند ہو گیا ۔ اب ملا نے سوچا کہ کثیر رقم خرچ کرنی ہے کیوں نے پہلے اس پر سواری کر کے تسلی کر لی جائے ۔ یوں وہ گھوڑی پر سوار ہو گئے ۔ اب گھوڑی نے جو برق رفتاری دکھائی تو ملا اسے سنبھال نہ سکے اور زمین پر آرہے ۔ لوگوں نے ملا سے کہا کہ معلوم ہوتا ہے کہ آپ نے آج تک گھوڑی پر سواری نہیں کی ۔ ملا نے جواب دیا ”اس میں میرا کوئی قصور نہیں تھا ۔ میں تو آرام سے بیٹھا تھا ، یکایک کاٹھی سے آگے کھسک گیا ۔ پھر تھوڑی دور جا کر ایک شدید جھٹا لگا تو میں ذرا آگے گردن کے قریب چلا گیا ۔ لگام میرے ہاتھ میں تھی اور میں لمحہ بہ لمحہ آگے سِرکتا چلا جا رہا تھا ۔ رفتہ رفتہ میں گھوڑی کی گردن پر آگیا ۔ ابھی میں اپنے سرکنے کی وجہ پر غور کر رہا تھا کہ اچانک میں نے محسوس کیا کہ گھوڑی کی لگام میرے ہاتھ میں ہے اور میں اس کےسر پر بیٹھا ہوں ۔ “
    ”اچھا پھر کیا ہوا“ ۔ لوگوں نے سوال کیا ۔
    ”ہونا کیا تھا ، اتنے میں گھوڑی ختم ہو گئی اور میں زمین پر آرہا“ ۔
    مُلا نصیرالدین کا گدھا مر چکا تھا اور اس کے بغیر ان کی زندگی بڑی مشکل سے گزر رہی تھی ۔ چنانچہ کئی مہینوں کی محنت و مشقت کے بعد کچھ رقم جمع کی اور ایک نیا گدھا خریدنے کی غرض سے بازار کا رخ کیا ۔ حسبِ منشا گدھا خریدا اور گھر کی راہ اس طرح لی کہ وہ گدھے کی رسی تھامے آگے آگے چل رہے تھے اور گدھا ان کے پیچھے آرہا تھا ۔ راستے میں چند ٹھگ قسم کے لوگوں نے ملا کو گدھا لے جاتے ہوئے دیکھا تو وہ ان کے قریب ہو گئے ۔ ان میں سے ایک آدمی گدھے کے بالکل ساتھ ساتھ چلنے لگا ۔ تھوڑی دیر بعد اس نے آہستہ سے گدھے کی گردن سے رسی نکال کر اپنی گردن میں ڈال دی اور گدھا اپنے ساتھیوں کے حوالے کر دیا ۔ جب ملا اپنے گھر کے دروازے پر پہنچے اور مڑ کے پیچھے جو دیکھا تو چار ٹانگوں والے گدھے کی بجائے دو ٹانگوں والا گدھا نظر آیا ۔ یہ دیکھ کر ملا سخت حیران ہوئے اور کہنے لگے ”سبحان اللہ! میں نے تو گدھا خریدا تھا یہ انسان کیسے بن گیا؟“ ۔
    یہ سن کر وہ ٹھگ بولا
    ”آقائے من! میں اپنی ماں کا ادب نہیں کرتا تھا اور ہر وقت ان کے درپے آزار رہتا تھا ۔ ایک دن انہوں نے مجھے بددعا دی کہ تو گدھا بن جائے ۔ چنانچہ میں انسان سے گدھا بن گیا تو میری ماں نے مجھے بازار میں لے جا کر فروخت کر دیا ۔ کئی سال سے میں گدھے کی زندگی بسر کر رہا تھا ۔ آج خوش قسمتی سے آپ نے مجھے خرید لیا اور آپ کی روحانیت کی برکت سے میں دوبارہ آدمی بن گیا۔“ یہ کہہ کر اس نے ملا کے ہاتھ کو بوسہ دیا اور بہت عقیدت کا اظہار کیا ۔
    ملا کو یہ بات بہت پسند آئی ۔ وفورِ مسرت میں نصیحت فرماتے ہوئے کہنے لگے ” اچھا اب جاؤ اور اپنی ماں کی خدمت کرو ۔ کبھی اس کے ساتھ گستاخی نہ کرنا “ ۔
    ٹھگ ملا کا شکریہ ادا کر کے رخصت ہو گیا ۔ دوسرے دن ملا نے کسی سے کچھ رقم ادھا لی اور پھر گدھا خریدنے بازار میں پہنچ گئے ۔ ان کی حیرانی کی کوئی حد نہ رہی جب انہوں نے دیکھا کہ وہی گدھا ایک جگہ بندھا کھڑا ہے جو انہوں نے کل خریدا تھا ۔ چنانچہ وہ اس گدھے کے قریب گئے اور اس کے کان میں کہنے لگے ” لگتا ہے تم نے میری نصیحت پر عمل نہیں کیا اس لیے پھر گدھے بن گئے ہو
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

  2. #2
    Join Date
    Jun 2009
    Posts
    763
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    7 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    214757

    Default re: Mulla Naseer Uddin

    very funny............
    mujhy "Mulla nasiruddin " ka kirdaar bachpan se bht pasand hy...

  3. #3
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default re: Mulla Naseer Uddin

    Thanks

    Main Bhi Is Ke Kaafi Jokes Parhta Rehta Hoon Bohot Funny Hai
    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

  4. #4
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    125,914
    Mentioned
    839 Post(s)
    Tagged
    9270 Thread(s)
    Thanked
    1180
    Rep Power
    21474971

    Default re: Mulla Naseer Uddin

    صرف آواز نہیں ، لفظ بھی مقفل ہیں مرے

    سوچ میں ہوں کہ اب تجھ کو پکاروں کیسے

  5. #5
    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Hijr
    Posts
    152,763
    Mentioned
    104 Post(s)
    Tagged
    8577 Thread(s)
    Thanked
    80
    Rep Power
    21474998

    Default re: Mulla Naseer Uddin

    پھر یوں ہوا کے درد مجھے راس آ گیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •