Results 1 to 2 of 2

Thread: Usey Kehna Bheegi January Lot Aye Hai.

  1. #1
    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    126,283
    Mentioned
    887 Post(s)
    Tagged
    9274 Thread(s)
    Thanked
    1569
    Rep Power
    21474973

    candel Usey Kehna Bheegi January Lot Aye Hai.

    وہی گلیاں،وہی کوچے وہی سردی کا موسم ہے
    اسی انداز سے اپنا نظام زیست برہم ہے

    یہ حسن ـ اتفاق ہے ایسا کہ نکھری چاندنی بھی ھے
    وہی ہر سمت ویرانی اداسی تشنگی سی ھے

    وہی ھے بھیڑ سوچوں کی وہی تنہائیاں پھر سے
    مسافر، اجنبی اور دشت کی پہنائیاں پھر سے

    مجھے سب یاد ہے کچھ سال پہلے کا یہ قصہ ہے
    وہی لمحہ تو ویرانے کا اک آباد حصہ ہے

    میری آنکھوں میں وہ ایک لمحہء موجود اب بھی ہے
    وہ زندہ رات میرے ساتھ لاکھوں بار جاگی ھے

    کسی نے رات کی تنہائی میں سرگوشیاں کی تھیں
    کسی کی نرم گفتاری نے دل کو لوریاں دی تھیں

    میرے شعروں میں وہ الہام کی صورت میں اترا تھا
    معانی بن کے جو جو لفظوں میں پہلی بار دھڑکا تھا

    کسی نے میری تنہائی کا سارا کرب بانٹا تھا
    کسی نے رات کی چنری میں روشن چاند ٹانکا تھا

    وہ جس کے ہونے سے زندگی نغمہ سرائی ھے
    اسے کہنا کہ بھیگی جنوری پھر لوٹ آئی ھے




    post 2 1166987303 - Usey Kehna Bheegi January Lot Aye Hai.
    Main un sheesha garahon se pochta hon
    K toota dil bhi jorra hai kisi ney



  2. #2
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    perdais
    Posts
    95
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Thanked
    0
    Rep Power
    0

    Default Re: Usey Kehna Bheegi January Lot Aye Hai.

    wah bht umda

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •