پاکستانی فاسٹ بالر محمد آصف کے خلاف ممنوعہ نشہ آور مواد رکھنے کے الزام پر سماعت بائیس جون کو ہوگی۔

محمد آصف کو دبئی کے ہوائی اڈے پر مبینہ طور پر مشکوک مواد برآمد ہونے کے بعد حراست میں لے لیا گیا تھا۔ اس کے بعد سے وہ ابھی تک دبئی کے حراستی مرکز میں ہیں۔

محمد آصف کے وکیل نے پاکستان کرکٹ بورڈ کو مطلع کیا ہے کہ محمد آصف کے معاملے کی سماعت بائیس جون کو ہوگی۔

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے محمد آصف کے معاملے میں دبئی کی ایک قانونی فرم کی خدمات حاصل کر رکھی ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر شفقت حسین نغمی نے بتایا کہ کوشش کی جا رہی ہے کہ جلد سے جلد سماعت ممکن ہوسکے لیکن محمد آصف کے وکیل کے مطابق ایسا مشکل ہے کیونکہ ابھی تک آصف پر فرد جرم ہی عائد نہیں کی گئی ہے۔
شفقت نغمی نے کہا کہ محمد آصف کی یورین رپورٹ کلیئر ہے لیکن ان کے قبضے سے برآمد ہونے والے مواد کے بارے میں رپورٹ سے پاکستان کرکٹ بورڈ ابھی تک لاعلم ہے۔

اس سوال پر کہ اس ممنوعہ مواد کی رپورٹ کے بارے میں پاکستان کرکٹ بورڈ کو نہ بتاکر کیا دبئی کے حکام انصاف کے تقاضے پورے کررہے ہیں شفقت نغمی نے کہا کہ متحدہ عرب امارات میں کئی ممالک سے زیادہ انصاف ہوتا ہے اور پاکستان کرکٹ بورڈ کو اس پر مکمل اعتماد ہے۔ یہ وہاں کا پہلا کیس نہیں ہے۔

شفقت نغمی نے اس بات کی سختی سے تردید کی کہ حکومت پاکستان کو بھی اس معاملے کو نمٹانے کے لیے شریک کر لیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سے اس بارے میں کسی قسم کی درخواست نہیں کی گئی ہے کیونکہ یہ ایک شخص کا انفرادی کیس ہے۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ وہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا ملازم ہے لہذا پی سی بی وہ آصف کی قانونی مدد کررہا ہے۔