پاکستان کرکٹ ٹیم کے فاسٹ باؤلر محمد آصف جمعہ کی صبح دبئی حکام سے رہائی پاکر وطن واپس پہنچ گئے۔ اس طرح ان کی زندگی کے 19اذیت ناک دن اختتام کو پہنچے ، انہیں یکم جون کو بھارت سے براستہ دبئی وطن واپس آتے ہوئے دبئی ائر پورٹ پر مبینہ طور پر منشیات رکھنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

محمد آصف نے لاہور ائر پور ٹ پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی رہائی کے لیے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئر مین نسیم اشرف ، متحدہ عرب امارت میں پاکستانی سفارتخانے اور دبئی حکام کے شکر گزار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ بے گناہ ہیں اور انہوں نے کوئی ممنوعہ اجزاء استعمال نہیں کیے۔ محمد آصف نے دعویٰ کیا کہ دبئی میں لیے گئے ان کے تمام ٹیسٹ کلئیر رہے اور اس سے پہلے انڈین پرئمیر لیگ کے دوران بھی ان کے ٹیسٹ لیے گئے تھے ۔انہوں نے کہا کہ اگر وہ منشیات استعمال کرتے تو IPLکے دوران ہی لیے گئے ٹیسٹوں میں اس کا پتا چل جاتا اور کرکٹ کی عالمی تنظیم ان پر پابندی لگادیتی۔

اس دوران پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ وہ دبئی حکام سے تمام تر شواہد حاصل کرنے کے بعد اپنے طور پر اس معاملے کی تحقیقات کرے گا۔ واضح رہے کہ پاکستان کے فاسٹ باؤلر محمد آصف دبئی میں حراست کے باعث بنگلہ دیش میں ہو نے والے تین قومی کرکٹ ٹورنامنٹ میں حصہ نہ لے سکے جبکہ وہ 24جون سے شروع ہونے والے ایشیا کپ کے لیے بھی پاکستان کے 20ممکنہ کھلاڑیوں میں شامل نہیں ہیں۔