تُو سمجھتا ہے محبت سے گزر جائے گا ؟
تُو جو نکلے گا کناروں سے تو مر جائے گا

میرے رونے سے سمندر میں اضافہ نہ سہی
کم سے کم آنکھ کا دریا تو اتر جائے گا
اے مرے عکسِ جنوں دیکھ مرے چہرے کو
تُو بھی خاموش رہے گا تو بکھر جائے گا