Results 1 to 7 of 7

Thread: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,542
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5871
    Rep Power
    214777

    Default اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    علی بن محمد، وکیع، اعمش، عبداللہ بن مرۃ، ابو الاحوص، حضرت عبداللہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا میں ہر دوست کی دوستی سے بیزار ہوں اگر میں کسی کو اللہ کے سوا دوست بناتا تو ابو بکر کو بناتا، تمہارا ساتھی اللہ کا دوست ہے ، وکیع فرماتے ہیں انہوں نے اپنے متعلق فرمایا۔


    ٭٭ ابو بکر بن ابی شیبہ وعلی بن محمد، ابو معاویہ، اعمش، ابو صالح، حضرت ابو ہریرہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا مجھے کسی کے مال نے اتنا نفع نہیں دیا جتنا ابو بکر کے مال نے دیا، ابو بکر رو پڑے اور کہنے لگے یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم میں اور میرا مال آپ ہی کے لئے تو ہیں۔


    ٭٭ ہشام بن عمار، سفیان ، حسن بن عمارۃ، فراس، شعبی، حارث حضرت علی سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا ابو بکر، اور عمر جنت میں بوڑھوں کے سردار ہیں ، پہلے اور پچھلے دونوں میں سوائے انبیاء اور رسولوں کے اے علی جب تک وہ زندہ ہیں ان کو خبر مت دینا۔


    ٭٭ علی بن محمد و عمرو بن عبد اللہ، وکیع، اعمش، عطیہ بن سعد، حضرت ابو سعید خدری سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا (جنت میں ) اونچے درجات والوں کو ان سے نچلے درجات والے یوں دیکھیں گے جس طرح آسمان کے کنارے پر طلوع ہونے والا ستارہ دکھائی دیتا ہے۔ ابو بکر و عمر انہی میں سے ہیں اور اچھی زندگی میں ہوں گے۔


    ٭٭ علی بن محمد، وکیع، محمد بن بشار، مؤمل، سفیان، عبدالملک بن عمیر، مولی لربعی بن حراش، حضرت حذیفہ بن الیمان سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا میں نہیں جانتا کہ کس قدر میری بقیہ زندگی تمہارے درمیان ہے تم میرے بعد آنے والوں کی اقتداء کرنا اور آپ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ابو بکر وعمر کی طرف اشارہ کیا۔


    ٭٭ علی بن محمد، یحییٰ بن آدم، ابن مبارد، عمر بن سعید بن ابی حسین، حضرت ابن ابی ملیکہ سے مروی ہے انہوں نے عبداللہ بن عباس کو فرماتے ہوئے سنا کہ جب عمر (کے جسد مبارک) کو چارپائی پر رکھا گیا تو ان کو لوگوں نے گھیرے میں لے لیا وہ ان کے لئے رحمت کی دعا کر رہے تھے ، یا یوں فرمایا کہ وہ انکی تعریف اور انکے لئے دعا کر رہے تھے ، جنازہ کے اٹھائے جانے سے پہلے ، میں ان میں شامل تھا۔ میں متوجہ ہوا وہ علی بن ابی طالب تھے انہوں نے عمر کے لئے رحمت کی دعا کی پھر فرمایا میں نے آپ کے علاوہ اور کسی کے متعلق نہیں چاہا کہ میں اللہ سے اس کے جیسے عمل کے ساتھ ملوں اور اللہ کی قسم، میں ہمیشہ گمان کرتا تھا کہ اللہ عزوجل آپ کو ضرور اپنے دو ساتھیوں کے ساتھ کریں گے اور یہ گمان اس وجہ سے تھا کہ میں نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کو کثرت سے یہ فرماتے ہوئے سنتا تھا کہ میں اور ابو بکر و عمر گئے میں اور ابو بکر و عمر آئے ، میں ابو بکر وعمر نکلے اس لئے میں گمان کرتا تھا کہ اللہ آپ کو اپنے دونوں ساتھیوں سے ملا دیں گے۔


    ٭٭ علی بن میمون رقی، سعید بن مسلمہ، اسماعیل بن امیہ، نافع، حضرت عبداللہ بن عمر سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم حضرت ابو بکر وعمر کے درمیان سے نکلے اور فرمایا کہ اسی طرح ہم اٹھائے جائیں گے۔


    ٭٭ ابو شعیب، صالح بن ہیثم واسطی، عبدالقدوس بن بکر بن خنیس، مالک بن مغول، عون بن حضرت ابو جحیفہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ارشاد فرمایا ابو بکر وعمر پہلے اور بعد میں آنے والے اہل جنت کے عمر رسیدہ لوگوں کے سردار ہوں گے ، سوائے انبیاء اور رسولوں کے۔


    ٭٭ احمد بن عبدہ، حسین بن حسن ، معتمر بن سلیمان، حمید، حضرت انس سے مروی ہے کہ عرض کیا گیا یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم لوگوں میں سے سب سے زیادہ پسندیدہ آپ کے نزدیک کون ہے؟ فرمایا عائشہ عرض کیا گیا مردوں میں سے کون ہے ، فرمایا ان کے والد۔


    ٭٭ علی بن محمد، ابو اسامہ، جویری، حضرت عبداللہ بن شقیق فرماتے ہیں میں نے حضرت عائشہ سے عرض کی کہ صحابہ میں سے کون رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے نزدیک محبوب تھا، انہوں نے فرمایا ابو بکر، میں نے عرض کیا، ان کے بعد، فرمایا عمر میں نے عرض کیا ان کے بعد کون تھا؟ فرمایا ابو عبیدہ۔


    ٭٭ اسماعیل بن محمد طلحی، عبداللہ بن خراش حوشی، عوام بن حوشب، مجاہد، حضرت عبداللہ بن عباس نے فرمایا جب عمر اسلام لائے تو جبرائیل نازل ہوئے اور فرمایا۔ اے محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم آسمان والے عمر کے اسلام سے بہت خوش ہیں۔ (اور خوشی کی وجہ سے آسمان فرشتوں کی اللَّہُ أَکْبَرُ کی آواز سے گونج اٹھا)۔


    ٭٭ اسماعیل بن محمد طلحہ، داؤد بن عطاء مدینی، صالح بن کیسان، ابن شہاب، سعید بن مسیب، حضرت ابی بن کعب سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا سب سے پہلے جس سے حق تعالی مصافحہ فرمائیں گے وہ عمر ہیں اور وہ سب سے پہلے شخص ہیں جن کو حق تعالی سلام فرمائیں گے اور سب سے پہلے شخص جن کے ہاتھ کو حق تعالی پکڑیں گے اور جنت میں داخل فرمائیں گے۔


    ٭٭ محمد بن عبید ابو عبید مدینی، عبدالملک بن ماجشون، زنجی بن خالد، ہشام بن عروۃ، عروۃ، حضرت عائشہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ارشاد فرمایا اے اللہ اسلام کو عمر کے ذریعے غالب فرما۔


    ٭٭ علی بن محمد ، وکیع، شعبہ، عمرو بن مرۃ، حضرت عبداللہ بن سلمہ فرماتے ہیں کہ میں نے حضرت علی کو فرماتے ہوئے سنا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے بعد لوگوں میں سب سے بہتر ابو بکر ہیں اور ابو بکر کے بعد سب سے بہتر عمر ہیں۔


    ٭٭ محمد بن حارث مصری، لیث بن سعد، عقیل، ابن شہاب، سعید بن مسیب، حضرت ابو ہریرہ فرماتے ہیں ہم جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے پاس بیٹھے ہوئے تھے آپ نے فرمایا دریں اثنائ، کہ میں سویا ہوا تھا ، میں نے اپنے آپ کو جنت میں دیکھا، وہیں ایک محل کے پہلو میں ایک عورت وضو کر رہی تھی، میں نے پوچھا کہ یہ محل کس کاہے؟ اس نے کہا کہ عمر کا۔ میں نے عمر کی غیرت کو یاد کیا اور پیچھے لوٹ آیا۔ ابو ہریرہ فرماتے ہیں کہ عمر یہ سن کر رو پڑے اور کہنے لگے کیا آپ پر جن پر میرے ماں باپ فدا ہوں میں غیرت کروں گا۔


    ٭٭ ابو سلمہ یحییٰ بن خلف، عبدالاعلی، محمد بن اسحاق ، مکحول، غضیف بن حارث، حضرت ابو ذر فرماتے ہیں کہ میں نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کو فرماتے ہوئے سنا کہ اللہ تعالی نے حق کو عمر کی زبان پر رکھ دیا وہ اسی کے ساتھ بات کرتے ہیں۔


    ٭٭ ابو مروان محمد بن عثمان عثمانی، ابو عثمان بن خالد، عبدالرحمن بن ابی زناد، ابو زناد، اعرج، حضرت ابو ہریرہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ارشاد فرمایا جنت میں ہر نبی کا ایک ساتھی ہو گا اور میرے ساتھی جنت میں حضرت عثمان بن عفان ہوں گے۔


    ٭٭ ابو مروان محمد بن عثمان عثمانی، ابو عثمان بن خالد، عبدالرحمن بن ابی زناد، ابو زناد، اعرج، حضرت ابو ہریرہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم حضرت عثمان سے مسجد کے باہر دروازے پر ملے ، اور فرمایا۔ اے عثمان یہ جبرائیل ہیں انہوں نے مجھے خبر دی ہے کہ اللہ نے آپ کا نکاح ام کلثوم سے حضرت رقیہ کے مہر کی مثل اور انہی جیسی مصاحبت پر کر دیا۔


    ٭٭ علی بن محمد، عبداللہ بن ادریس، ہشام بن حسان، محمد بن سیرین، حضرت کعب بن عجرہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ایک فتنہ کا ذکر کیا قریبی زمانے میں اسی وقت ایک آدمی اپنے سر کو ڈھانپے ہوئے گزرا۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا کہ یہ شخص اس دن ہدایت پر ہو گا ، میں نے چھلانگ لگائی اور حضرت عثمان کو پکڑ لیا۔ پھر میں نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے پاس آیا اور عرض کی یہ والے ? آپ نے فرمایا ہاں۔


    ٭٭ علی بن محمد، ابو معاویہ، فرح بن فضالہ، ربیعہ بن یزید دمشقی، نعمان بن بشیر، حضرت عائشہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا۔ اے عثمان اگر اللہ تمہیں اس امر (خلافت) کا والی بنا دے تو منافقین چاہیں گے کہ تم قمیص اتار دو (یعنی خلافت) جو اللہ نے تمہیں پہنائی ہو گی تم اس کو نہ اتارنا آپ نے تین مرتبہ فرمایا۔ نعمان بن بشیر فرماتے ہیں کہ میں نے حضرت عائشہ سے عرض کی کہ آپ کو کس چیز نے یہ بات لوگوں کو بتانے سے روک دیا، انہوں نے فرمایا کہ مجھے یہ بات بھلا دی گئی۔


    ٭٭ محمد بن عبداللہ بن نمیر وعلی بن محمد، وکیع، اسماعیل بن ابی خالد، قیس بن ابی حازم، حضرت عائشہ سے مروی ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے اپنے مرض الموت میں فرمایا میرا جی چاہتا ہے کہ میرا کوئی ساتھی میرے پاس ہو، ہم نے عرض کیا یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کیا ہم آپ کے لئے ابو بکر کو بلا لیں ، آپ خاموش رہے ، ہم نے کہا کہ عمر کو بلا لیں۔ آپ خاموش رہے ، ہم نے کہا کہ عثمان کو بلا لیں ، آپ نے فرمایا کہ ہاں۔ عثمان تشریف لائے تو آپ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کا چہرہ مبارک کھل اٹھا ان کو دیکھ کر۔ آپ نے ان سے باتیں کرنی شروع کر دیں اس دوران حضرت عثمان کا چہرہ متغیر ہوتا رہا، قیس فرماتے ہیں کہ مجھ سے عثمان بن عفان کے غلام ابو سہلہ نے بیان کیا کہ عثمان نے اپنی شہادت کے روز فرمایا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے مجھے سے عہد لیا تھا کہ میں اس کو پورا کروں گا۔ حضرت علی اپنی روایت میں فرماتے ہیں کہ میں اس پر صبر کروں گا۔ قیس فرماتے ہیں کہ لوگ ان کو اس دن دیکھ رہے تھے۔



    سنن ابن ماجہ

  2. The Following 2 Users Say Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  3. #2
    Join Date
    Feb 2010
    Location
    dubai
    Posts
    11,835
    Mentioned
    7557 Post(s)
    Tagged
    11727 Thread(s)
    Thanked
    3026
    Rep Power
    214771

    Default Re: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    jazak Allah khair

  4. #3
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,542
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5871
    Rep Power
    214777

    Default Re: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    پسند کرنے کا شکریہ

    جزاک اللہ خیراً کثیرا

  5. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  6. #4
    Join Date
    Mar 2018
    Location
    Pakistan
    Posts
    2,428
    Mentioned
    7719 Post(s)
    Tagged
    3539 Thread(s)
    Thanked
    1626
    Rep Power
    5

    Default Re: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    Subhan Allah
    Bohat umdah
    Jazak Allah

  7. The Following User Says Thank You to Mariaa For This Useful Post:


  8. #5
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,542
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5871
    Rep Power
    214777

    Default Re: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    Quote Originally Posted by Mariaa View Post
    Subhan Allah
    Bohat umdah
    Jazak Allah
    ماشاءاللہ
    پسند ، رائے اور حوصلہ افزائی کا شکریہ
    جزاک اللہ خیراً کثیرا

  9. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  10. #6
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Baazeecha E Atfaal
    Posts
    14,234
    Mentioned
    1112 Post(s)
    Tagged
    210 Thread(s)
    Thanked
    323
    Rep Power
    23

    Default Re: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    Nice Sharing :-) Keep Sharing :-)

  11. #7
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,542
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5871
    Rep Power
    214777

    Default Re: اصحاب رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے فضائل کے بارے میں

    Quote Originally Posted by Saff-Shikan View Post
    Nice Sharing :-) Keep Sharing :-)
    پسند اور رائے کا شکریہ
    جزاک اللہ خیراً کثیرا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •