Results 1 to 3 of 3

Thread: وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Islam وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں

    a152.jpg

    وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں
    تیرے دن اے بہار پھرتے ہیں

    جو ترے در سے یار پھرتے ہیں
    در بدر یونہی خوار پھرتے ہیں

    آہ کل عیش تو کیے ہم نے
    آج وہ بے قرار پھرتے ہیں

    ان کے ایما سے دونوں باگوں پر
    خیلِ لیل و نہار پھرتے ہیں

    ہر چراغِ مزار پر قدسی
    کیسے پروانہ وار پھرتے ہیں

    اس گلی کا گدا ہوں میں جس میں
    مانگتے تاجدار پھرتے ہیں

    جان ہیں ، جان کیا نظر آئے
    کیوں عدو گردِ غار پھرتے ہیں

    پھول کیا دیکھوں میری آنکھوں میں
    دشتِ طیبہ کے خار پھرتے ہیں

    لاکھوں قدسی ہیں کامِ خدمت پر
    لاکھوں گردِ مزار پھرتے ہیں

    وردیاں بولتے ہیں ہرکارے
    پہرہ دیتے سوار پھرتے ہیں

    رکھیے جیسے ہیں خانہ زاد ہیں ہم
    مَول کے عیب دار پھرتے ہیں

    ہائے غافل وہ کیا جگہ ہے جہاں
    پانچ جاتے ہیں ، چار پھرتے ہیں

    بائیں رستے نہ جا مسافر سُن
    مال ہے راہ مار پھرتے ہیں

    جاگ سنسان بن ہے ، رات آئی
    گرگ بہرِ شکار پھرتے ہیں

    نفس یہ کوئی چال ہے ظالم
    کیسے خاصے بِجار پھرتے ہیں

    کوئی کیوں پوچھے تیری بات رضا
    تجھ سے کتے ہزار پھرتے ہیں
    2gvsho3 - وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں

  2. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  3. #2
    Join Date
    Mar 2018
    Location
    Pakistan
    Posts
    2,428
    Mentioned
    9072 Post(s)
    Tagged
    3539 Thread(s)
    Thanked
    1626
    Rep Power
    6

    Default Re: وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں

    Quote Originally Posted by intelligent086 View Post
    a152.jpg

    وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں
    تیرے دن اے بہار پھرتے ہیں

    جو ترے در سے یار پھرتے ہیں
    در بدر یونہی خوار پھرتے ہیں

    آہ کل عیش تو کیے ہم نے
    آج وہ بے قرار پھرتے ہیں

    ان کے ایما سے دونوں باگوں پر
    خیلِ لیل و نہار پھرتے ہیں

    ہر چراغِ مزار پر قدسی
    کیسے پروانہ وار پھرتے ہیں

    اس گلی کا گدا ہوں میں جس میں
    مانگتے تاجدار پھرتے ہیں

    جان ہیں ، جان کیا نظر آئے
    کیوں عدو گردِ غار پھرتے ہیں

    پھول کیا دیکھوں میری آنکھوں میں
    دشتِ طیبہ کے خار پھرتے ہیں

    لاکھوں قدسی ہیں کامِ خدمت پر
    لاکھوں گردِ مزار پھرتے ہیں

    وردیاں بولتے ہیں ہرکارے
    پہرہ دیتے سوار پھرتے ہیں

    رکھیے جیسے ہیں خانہ زاد ہیں ہم
    مَول کے عیب دار پھرتے ہیں

    ہائے غافل وہ کیا جگہ ہے جہاں
    پانچ جاتے ہیں ، چار پھرتے ہیں

    بائیں رستے نہ جا مسافر سُن
    مال ہے راہ مار پھرتے ہیں

    جاگ سنسان بن ہے ، رات آئی
    گرگ بہرِ شکار پھرتے ہیں

    نفس یہ کوئی چال ہے ظالم
    کیسے خاصے بِجار پھرتے ہیں

    کوئی کیوں پوچھے تیری بات رضا
    تجھ سے کتے ہزار پھرتے ہیں

    Subhan Allah
    Bohat umdah
    Jazak Allah

  4. The Following User Says Thank You to Mariaa For This Useful Post:


  5. #3
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں

    Quote Originally Posted by Mariaa View Post



    Subhan Allah
    Bohat umdah
    Jazak Allah

    ماشاءاللہ
    پسند ، رائے اور حوصلہ افزائی کا شکریہ
    جزاک اللہ خیراً کثیرا

    2gvsho3 - وہ سوئے لالہ زار پھرتے ہیں

  6. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •