دن بھی نہ بیتا رات نہ بیتی
تیری ایک بھی بات نہ بیتی

ٹھہر گئی آ کر آنکھوں میں
تیرے بن برسات نہ بیتی

آنسو رکے نا ان نینوں سے
تاروں کی بارات نہ بیتی

جم سی گئی احساس کے اندر
جیون بیتا مات نہ بیتی

بیت گئے ان گنت زمانے
ایک تمہاری ذات نہ بیتی
***