آپ سے مہکا تخیل آپ پر نازاں قلم۔ ا ے رسول محترم
میری ہر اک سوچ پر ہے آپ کا لطف وکرم۔ اے رسول محترم
آپکا ذکر مقدس ہر دعا کا تاج ہے۔ غمزدوں کی لاج ہے
اسکے بن بیکار ہر اک بندگی رب کی قسم۔ اے رسول محترم
آپ آئے کائنات حسن پر چھایا نکھار ۔ اے حبیب کر دگار
بزم ہستی کے ہیں محسن آپکے نقش قدم ۔ اے رسول محترم
آپ کے باعث جہاں میں آدمی مسرور ہے۔ زندگی پر نور ہے
آپ کی ذاتِ مقدس آدمیت کا بھرم۔ اے رسولِ محترم
آپکی توصیف میں اترا ہے قرآن مبیں ۔رحمت اللعالمین
آپکا شیدا ہے شرق و غرب اور عرب و عجم۔! اے رسول محترم
آپکا دامانِ رحمت جس کو ہو جائے نصیب ۔کتنا وہ رب کے قریب
پھر اسے خدشہ جہنم کا نہ ہو محشر کا غم ۔ اے رسول محترم
آس جگ میں اسکو پھر پرواہ نہیں انجام کی۔ صبح کی نہ شام کی
جس کی جانب آپکا ہو جائے الطاف و کرم ۔ اے رسول محترم