سکون دل کے لیے جاوداں خوشی کے لیے
نبی کا ذکر ضروری ہے زندگی کے لیے
مقام فیض کی تم کو اگر تمنا ہے
درود پڑھتے رہو اپنی بہتری کے لیے
اسے بھی اذن حضوری کا شرف مل جاتا
تڑپ رہا ہے جو سرکار حاضری کے لیے
خدائے پاک نے کیا کیا نہ اہتمام کیا
حبیبِ پاکؐ سے ملنے کی اک گھڑی کے لیے
حضور آپ ہی تخلیقِ وجہہ کون و مکاں
نبی ہے عالم ہستی بھی آپ ہی کے لیے
حضورؐ عرب و عجم آپ کے تمنائی
حضور شرق و غرب بھی ہیں آپ ہی کے لیے
نثار ان پہ کروں اپنی سانس سانس کا لمس
مرے وجود کی تابندگی انہی کے لیے
تمام ساعتیں بخشیں جو زندگی نے تمہیں
انہی کو وقف کروآ س ا ٓج انہی کے لیے
نبی ہمارا نبی وہ ہے انبیاء جس کی
کریں خدا سے دعا انکے امتی کے لیے
اگر حضورؐ کی سچی لگن خدا دے دے
میں سر اٹھاوں نہ سجدے سے اک گھڑی کے لیے
حضورؐ بعد ولادت کے کر رہے تھے دعا
خدائے پاک سے امت کی بخششی کے لیے
حضورؐ آس کو وہ اذنِ نعت مل جائے
بنے وسیلہ جو بخشش کا اخروی کے لیے