چین میں حقیقت سے قریب تر کمپیوٹرائزڈ خاتون اینکر تیار
a.jpg

بیجنگ: (روزنامہ دنیا) قارئین کو یاد ہوگا کہ چند ماہ قبل چین کے پہلے کمپیوٹر سے پیدا کردہ نیوز اینکر کی تصاویر اور ویڈیو دنیا بھر میں مقبول ہوئی تھیں۔ اور اب سرکاری نیوز ایجنسی نے کمپیوٹر کی مدد سے ایک اور خاتون نیوز اینکر بنائی ہے۔

نئی تیار کردہ نیوز اینکر دیکھنے میں غیرمعمولی طور پر عام انسانوں کی طرح دکھائی دیتی ہے۔ اس کی تیاری میں جدید ترین مصنوعی انٹیلی جنس استعمال کی گئی ہے اور اسی بنا پر یہ حقیقت سے بہت قریب تر ہے۔

خبر رساں ایجنسی زنہوا نے اس کا ایک ویڈیو کلپ بھی ریلیز کیا ہے تاہم یہ مارچ سے باقاعدہ خبریں پڑھنے کا آغاز کرے گی۔ اس کی آواز اور لہجہ باقاعدہ سرکاری نیوز کاسٹر کیو مینگ سے لیا گیا ہے اور مصنوعی ذہانت کو ہوبہو نقل کر کے روبوٹ نیوزکاسٹر کے لبوں پر سجایا ہے۔