Results 1 to 2 of 2

Thread: اداکار یعقوب

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5878
    Rep Power
    214780

    glass اداکار یعقوب


    اداکار یعقوب
    a.jpg
    عبدالحفیظ ظفر
    ۔40ء اور 50ء کی دہائی میں ہندوستانی فلمی صنعت میں بہت سے مسلمان فنکاروں نے اپنی صلاحیتوں کا سکہ جمایا۔ ان میں مرد و خواتین دونوں شامل تھے۔ تقسیمِ ہند کے بعد کچھ مسلمان فنکار واپس آ گئے اور کچھ نے بھارت میں قیام کو ترجیح دی۔ ویسے تو اس سلسلے میں بہت سے مسلمان فنکاروں کے نام لیے جا سکتے ہیں لیکن ایک نام خصوصی اہمیت کا حامل ہے اور وہ ہے یعقوب۔ 1904ء میں جبل پور (بھارت) میں پیدا ہونے والے یعقوب کا پورا نام یعقوب خان محبوب خان تھا۔ ان کا تعلق پٹھان خاندان سے تھا۔ انہوں نے 30 برس تک بھارتی فلمی صنعت میں کام کیا۔ وہ ایک ورسٹائل اداکار تھے۔ انہوں نے ولن کے طور پر بھی کام کیا، کیریکٹر ایکٹر کے طور پر بھی انہوں نے اپنے آپ کو منوایا اور مزاحیہ اداکاری کے میدان میں بھی اپنے فن کا سکہ جمایا۔ کمال کی بات یہ ہے کہ انہوں نے ایکسٹرا کے طور پر اپنے کیرئیر کا آغاز کیا۔ پھر وہ ہیرو کے طور پر جلوہ گر ہوئے۔ اس کے بعد انہوں نے ولن کے طور پر اپنے آپ کو منوایا۔ اس کے بعد وہ مزاحیہ اداکار کے طور پر بھی کام کرتے رہے۔ وہ اپنے زمانے کے بہترین ولن اور مزاحیہ اداکار تھے۔ انہوں نے مجموعی طور پر 300 سے زیادہ فلموں میں فنکارانہ صلاحیتوں کے جوہر دکھائے۔ یعقوب خان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ اوائل عمری میں ہی گھر سے بھاگ گئے تھے۔ انہوں نے موٹر مکینک اور ہوٹل میں ویٹر کا کام بھی کیا۔ پھر وہ بحری جہاز ’’ایس ایس مادرہ‘‘ میں کچن ورکر کی حیثیت سے کام کرتے رہے۔ بحری جہاز کے ذریعے انہوں نے بہت سے شہروں کا سفر کیا جن میں لندن، برسلز اور پیرس شامل ہیں۔ پھر وہ کلکتہ آ گئے جہاں انہوں نے مختلف نوکریوں کے علاوہ ٹورسٹ گائیڈ کے طور پر بھی کام کیا۔ 1924ء میں وہ ممبئی آ گئے جہاں انہوں نے شاردا فلم کمپنی میں شمولیت اختیار کر لی۔ یعقوب نے جب غیر ملکی سفر کیے تو اس کا انہیں سب سے بڑا فائدہ یہ ہوا کہ انہیں ہالی وُڈ اداکاروں کی فلمیں دیکھنے کا موقع ملا۔ انہیں ہالی وُڈ کے کئی اداکاروں نے متاثر کیا جن میں ایڈی پولو، ڈگلس، فیئر بکس، ولاس بیری اور ہمفرے بوگرٹ شامل ہیں۔ یعقوب نے سب سے پہلے 1925ء میں خاموش فلم ’’باجی راؤ مستانی‘‘ میں کام کیا۔ اس فلم میں ماسٹر وٹھل نے بھی کام کیا تھا۔ یہ فلم شاردا فلم کمپنی نے بنائی تھی۔ 1931ء میں انہوں نے پہلی بولتی فلم ’’میری جان‘‘ میں اداکاری کی۔ یہ فلم ساگر مووی ٹون نے بنائی تھی اور اس کی ہدایات پر افلا گھوش نے دی تھیں۔ اس فلم میں انہوں نے مرکزی کردار ادا کیا تھا۔ اس فلم میں ان کے ساتھ ماسٹر وٹھل اور زبیدہ نے کام کیا تھا۔ 1940ء میں انہوں نے محبوب خان کی فلم ’’عورت‘‘ میں ایک ناراض بیٹے کا کردار ادا کیا اور اس کردار نے انہیں زبردست مقبولیت عطا کی۔ آج تک ان کی اداکاری کو بہترین تصور کیا جاتا ہے۔ ’’عورت‘‘ میں انہوں نے جو کردار ادا کیا بعد میں 1957ء میں یہی کردار سنیل دت نے فلم ’’مدر انڈیا‘‘ میں ادا کیا۔ یہ فلم بھی محبوب خان نے بنائی تھی۔ یعقوب مقبولیت کے عروج پر جا پہنچے۔ 1951ء میں دلیپ کمار، بلراج ساہنی اور نرگس کی فلم ’’ہلچل‘‘ ریلیز ہوئی تو ٹائٹل کے آخر میں یعقوب کا نام دیا گیا اور یہ پڑھنے کو ملا ’’اور آپ کے پسندیدہ یعقوب‘‘۔ یعقوب نے جس دور میں مزاحیہ اداکاری کا آغاز کیا تو اس وقت جانی واکر، گوپ اور آغا کے نام کا ڈنکا بجتا تھا۔ یعقوب کی جوڑی آغا اور گوپ کے ساتھ بہت پسند کی گئی۔ یہی وجہ تھی کہ ان تینوں کو کئی فلموں میں اکٹھے کاسٹ کیا گیا۔ یعقوب اور گوپ کی مقبول فلموں میں ’’سگائی (1951ئ)، پتنگا (1949ئ) اور بے قصور‘‘ شامل ہیں۔ اس وقت پرتھوی راج کپور، چندر موہن اور یعقوب سب سے زیادہ معاوضہ لیتے تھے۔ یعقوب نے تین فلموں کی ہدایات بھی دیں۔ ان میں ’’ساگر کا شیر، اس کی تمنا اور آئیے‘‘ شامل ہیں۔ ’’ساگر کا شیر‘‘ 1937ء میں ساگر مووی ٹون کے بینر تلے بنائی گئی۔ ’’اس کی تمنا‘‘ 1939ء میں مکمل ہوئی۔ 1949ء میں انہوں نے فلم ’’آئیے‘‘ کی ہدایات دیں۔ اس فلم میں سلوچنا چیٹرجی، مسعود، جانکی داس، شیلہ ناٹک، اشرف خان اور یعقوب نے اداکاری کے جوہر دکھائے تھے۔ اس فلم کی موسیقی ناشاد (شوکت دہلوی) نے مرتب کی تھی۔ اس فلم میں پہلی بار مبارک بیگم نے پلے بیک سنگر کی حیثیت سے نغمہ گایا۔ لیکن یہ فلم باکس آفس پر ناکام ہو گئی اور یعقوب خان کو سخت مالی نقصان ہوا۔ بعد میں یعقوب نے اعتراف کیا کہ یہ فلم بنانا ان کی زندگی کی سب سے بڑی غلطی تھی۔ بھارت کے نامور کامیڈین محمود جب اداکار بننے کے لیے جدوجہد کر رہے تھے تو وہ بمبئے ٹاکیز کے پاس کھڑے یعقوب کا انتظار کرتے تھے۔ اس وقت محمود مالی تنگدستی کا شکار تھے۔ یعقوب نے ہمیشہ ان کی مدد کی۔ یعقوب کے بارے میں یہ بھی کہا جاتا ہے کہ وہ بڑے مذہبی آدمی تھے اور ان کے دوست انہیں مولانا کہہ کر پکارتے تھے۔ بھارت کے معروف اداکار نصیرالدین شاہ نے تین اداکاروں کو اپنا پسندیدہ قرار دیا جن میں بلراج ساہنی، موتی لال اور یعقوب شامل ہیں۔ یعقوب خان کی مشہور فلموں میں بلبل بغداد، مِس 1933، وطن، عورت، نجمہ، زینت، نیک پروین، پتنگا، سگائی، بے قصور، ہلچل، وارث، پے انگ گیسٹ اور دیدار‘‘ کے نام لیے جا سکتے ہیں۔ 1958ء کو اس بے مثل اداکار کا ممبئی میں انتقال ہو گیا۔ ٭…٭…٭

    2gvsho3 - اداکار یعقوب

  2. The Following User Says Thank You to intelligent086 For This Useful Post:


  3. #2
    Join Date
    Mar 2018
    Location
    Pakistan
    Posts
    2,428
    Mentioned
    9072 Post(s)
    Tagged
    3539 Thread(s)
    Thanked
    1626
    Rep Power
    6

    Default Re: اداکار یعقوب

    Very Nice
    tfs

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •