مرا انتظار قدیم ہے
مرا تم سے پیار قدیم ہے
مرے پھوٹے ہوئے نصیب پر
ترا اختیار قدیم ہے
مرے ساتھ دکھ میں ہے آسماں
مرا سوگوار قدیم ہے
***