بلبل , دلچسپ حقائق
23058 74439437 - بلبل , دلچسپ حقائق
محمد اقبال
بلبل اپنے ’’نغموں‘‘کی وجہ سے جانی جاتی ہے۔ اس کی سریلی آواز کانوں کو بھلی لگتی ہے۔ بلبل عموماً اکیلے رہنا پسند کرتی ہے۔ جہاں کہیں درخت اور سبزہ زیادہ ہو یہ نظر آجاتی ہے۔ آئیے اس کے بارے مزید معلوم کرتے ہیں: ٭: بلبل کے نغموں کی بنیا دپر بہت سے معروف موسیقاروں نے دھنیں بنائیں۔ ان میں بیتھوون اور چاکوفسکی شامل ہیں۔ ہومر، شیکسپیئر اور جان کیٹس جیسے لکھاریوں نے اس کے بارے میں لکھا۔ ٭: بلبل کی لمبائی 5.9 سے 6.5 انچ تک ہوتی ہے۔ مادہ قدرے چھوٹی ہوتی ہے۔ ٭: بلبل پھل، بیج اور حشرات کھاتی ہے۔ ٭: اس کے فطری شکاریوں میں چوہے، لومڑیاں، بلیاں، رینگنے والے بڑے جانور اور بڑے گوشت خور پرندے شامل ہیں۔ ٭: مادہ پانچ سے چھ انڈے دیتی ہے جس سے 15 سے 20 دنوں میںبچے نکل آتے ہیں۔ دو چار ہفتوں میں بچے اپنی آزاد زندگی بسر کرنے کے قابل ہو جاتے ہیں۔ ٭: بلبل کے گانے کا پہلا براہِ راست ریڈیو شو 19 مئی 1924ء کو برطانوی قصبے آکسٹڈ سے نشر ہوا۔ ٭: بلبل ایک ہزار سے زائدمختلف آوازیں نکالنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ دوسرے پرندوں کی نسبت اس کے دماغ میں آوازیں پیدا کرنے والا حصہ بڑا ہے۔ ٭: شاعروں کو شاید عجب لگے لیکن بلبلوں میں صرف نر گاتے ہیں۔ ٭…٭…٭