پی ایس ایل سیزن فور , ڈیلپورٹ نے لاہور قلندرز کے اوسان خطا کر دیئے
1399925 48437690 - پی ایس ایل سیزن فور , ڈیلپورٹ نے لاہور قلندرز کے اوسان خطا کر دیئ
مرد میدان نے ایونٹ کی تیز ترین سنچری بنا کر اسلام آباد یونائیٹڈ کو 49رنز سے فتح دلادی،آصف علی اور فہیم اشرف کی بھی ریکارڈ ساز کارکردگی،سہیل اختر کی اننگز رائیگاں گئی

کراچی(اسپورٹس رپورٹر)پاکستان سپر لیگ سیزن فور کے کراچی میں کھیلے گئے اولین معرکے میں کیمرون ڈیلپورٹ نے لاہور قلندرز کے اوسان خطا کر دیئے ،مرد میدان نے ایونٹ کی تیز ترین سنچری بنا کر اسلام آباد یونائیٹڈ کو 49رنز سے فتح دلادی،آصف علی کی تیز ترین ففٹی اور فہیم اشرف کے چھ شکاروں کی ریکارڈ ساز کارکردگی بھی کامیابی میں معاون رہی،سہیل اختر کی اننگز رائیگاںگئی۔نیشنل اسٹیڈیم میں ٹاس جیت کر لاہور قلندرز نے فیلڈ سنبھالی تو اسلام آباد یونائیٹڈ کی ٹیم پہلی بال پر اپنے بہترین بیٹسمین لیوک رونکی سے صفر پر محروم ہو گئی جن کو شاہین آفریدی نے حارث سہیل کے ہاتھوں سلپ میں کیچ کرادیا جبکہ پیٹر سالٹ بھی محض دس رنز کا اضافہ کر سکے لیکن کیمرون ڈیلپورٹ کا بیٹ رنز فراہم کرتا رہا جنہوں نے دو چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے 48 رنز بنانے والے چیڈوک والٹن کے ساتھ تیسری وکٹ پر 118رنز کا اضافہ کر کے لاہور قلندرز کی ابتدائی کامیابیوں کو دھندلا دیا۔کیمرون ڈیلپورٹ نے محض 49 بالز پر ایونٹ کی تیز ترین سنچری کا نیا ریکارڈ قائم کیا اور اختتامی چھ اوورز میں آصف علی کے ساتھ 88 رنز جوڑ کر اسلام آباد یونائیٹڈ کو تین وکٹوں پر 238رنز تک پہنچا دیا جو پی ایس ایل میں سب سے بڑا اور کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم پر بھی بہترین ٹی ٹوئنٹی مجموعہ ثابت ہوا۔ کیمرون ڈیلپورٹ نے بہترین بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 117ناٹ آؤٹ میں 13چوکے اور چھ چھکے لگائے جبکہ آصف علی نے 17بالز پر عمر اکمل کی تیز ترین نصف سنچری کا ریکارڈ برابر کرنے کے ساتھ ناقابل شکست 55 رنز میں تین چوکے اور چھ چھکے رسید کئے اور ایک اننگز میں 16جبکہ میچ میں 27 چھکوں کا نیا ریکارڈ بھی قائم ہوگیا۔ لاہور قلندرز کے شاہین آفریدی نے سندیپ لمیچھانے اور ڈیوڈ وائز کی طرح اگرچہ ایک وکٹ حاصل کی لیکن وہ چار اوورز میں 62رنز دے کرایونٹ کی تاریخ میں سب سے مہنگے بالر بھی بن گئے کیونکہ اس سے قبل یہ ریکارڈ مشترکہ طور پر سہیل خان اور انورعلی کے پاس تھا جنہوں نے یکساں طور پر 57 رنز دیئے تھے ۔ جوابی اننگز میں لاہور قلندرز کی ٹیم بڑے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے لڑکھڑا گئی جس کی ابتدائی چار وکٹیں 79 رنز پر گر گئیں۔ اینٹن ڈیوچچ 18رنز بنا سکے اور کپتان فخر زمان نے چار چوکے اور تین چھکے لگا کر 38 رنز بنائے جبکہ حارث سہیل نے صفر کا ذائقہ چکھا تو رکی ویسلز کی مزاحمت 20 رنز پر دم توڑ گئی۔ سہیل اختر نے ایک اینڈ سے رنز کی فراہمی جاری رکھی اور جارحانہ انداز سے کھیلتے ہوئے 75 رنز میں آٹھ چوکے اور پانچ چھکے لگائے لیکن ڈیوڈ وائز کے 12 رنز بنا کر میدان چھوڑ جانے کے بعد کوئی بھی سہیل اختر کا ساتھ نہیں نبھا سکا اور 56 رنز کے فرق سے پانچ وکٹیں گنوا کر لاہور قلندرز کو نو وکٹوں پر 189 رنز تک محدود رہنا پڑا۔اسلام آباد یونائیٹڈ کے آل راؤنڈر فہیم اشرف نے 19 رنز کے بدلے چھ کھلاڑیوں کو ٹھکانے لگا کر پی ایس ایل میں دوسری بہترین بالنگ کا ریکارڈ بنایا کیونکہ ان سے قبل روی بوپارا نے کراچی کنگز کی جانب سے 16 رنز کے عوض چھ وکٹیں حاصل کی تھیں۔اسلام آباد یونائیٹڈ نے اس کامیابی کے ساتھ پلے آف کیلئے نشست پکی کرلی جبکہ لاہور قلندرز کیلئے آگے بڑھنے کی راہیں مسدود ہو گئیں جس کا ایک میچ باقی ہے جبکہ کراچی کنگز کے پاس دو میچز ہیں جن میں سے ایک کامیابی بھی اسے چار بہترین ٹیموں میں شامل کرا سکتی ہے ۔