ہوا کے سامنے

ہوا کا کارِ منصب ہی کچھ ایسا ہے کہ ہر جانب
بجھاتی ہے چراغوں کو ،لویں مدھم نہیں کرتی
یہ کیا مایوس ہو کر راہ میں دل چھوڑ بیٹھے ہو
محبت حوصلہ دیتی ہے ،ہمت کم نہیں کرتی !
***