Results 1 to 2 of 2

Thread: اندیشہ ہائے دُور دراز

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,618
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5874
    Rep Power
    214777

    New5555 اندیشہ ہائے دُور دراز


    اندیشہ ہائے دُور دراز

    اُداس شام دریچوں میں مُسکراتی ہے
    ہَوا بھی،دھیمے سُروں میں ،کوئی اُداس گیت
    مرے قریب سے گُزرے تو گنگناتی ہے
    مری طرح سے شفق بھی کسی کی سوچ میں ہے
    میں اپنے کمرے میں کھڑکی کے پاس بیٹھی ہوں
    مری نگاہ دھندلکوں میں اُلجھی جاتی ہے
    نہ رنگ ہے،نہ کرن ہے،نہ روشنی، نہ چراغ
    نہ تیرا ذکر، نہ تیرا پتہ، نہ تیرا سُراغ
    ہَوا سے ،خشک کتابوں کے اُڑ رہے ہیں ورق
    مگر میں بھُول چُکی ہُوں تمام ان کے سبق
    اُبھر رہا ہے تخیُل میں بس ترا چہرہ
    میں اپنی پلکیں جھپکتی ہوں اُس کو دیکھتی ہوں
    میں اس کو دیکھتی ہوں اور ڈر کے سوچتی ہوں
    کہ کل یہ چہرہ کسی اور ہاتھ میں پہنچے
    تو میرے ہاتھوں کی لکھی ہُوئی کوئی تحریر
    جو اِن خطوط میں روشن ہے آگ کی مانند
    نہ ان ذہین نگاہوں کی زد میں آ جائے!


    2gvsho3 - اندیشہ ہائے دُور دراز

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,618
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5874
    Rep Power
    214777

    Default Re: اندیشہ ہائے دُور دراز

    2gvsho3 - اندیشہ ہائے دُور دراز

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •