Results 1 to 2 of 2

Thread: پتھر کے جگر والو غم میں وہ روانی ہے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5878
    Rep Power
    214780

    New5555 پتھر کے جگر والو غم میں وہ روانی ہے

    پتھر کے جگر والو غم میں وہ روانی ہے
    خود راہ بنا لے گا بہتا ہوا پانی ہے

    پھولوں میں غزل رکھنا یہ رات کی رانی ہے
    اس میں تری زلفوں کی بے ربط کہانی ہے

    اک ذہن پریشان میں وہ پھول سا چہرہ ہے
    پتھر کی حفاظت میں شیشے کی جوانی ہے

    کیوں چاندنی راتوں میں دریا پہ نہاتے ہو
    سوئے ہوئے پانی میں کیا آگ لگانی ہے

    اس حوصلہ دل پر ہم نے بھی کفن پہنا
    ہنس کر کوئی پوچھے گا کیا جان گنوانی ہے

    رونے کا اثر دل پر رہ رہ کے بدلتا ہے
    آنسو کبھی شیشہ ہے آنسو کھبی پانی ہے

    یہ شبنمی لہجہ ہے آہستہ غزل پڑھنا
    تتلی کی کہانی ہے پھولوں کی زبانی ہے
    ***


    2gvsho3 - پتھر کے جگر والو غم میں وہ روانی ہے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5878
    Rep Power
    214780

    Default Re: پتھر کے جگر والو غم میں وہ روانی ہے

    2gvsho3 - پتھر کے جگر والو غم میں وہ روانی ہے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •