Results 1 to 2 of 2

Thread: یہ شعر کی دیوی ہے بہروپ تو دھارے گی

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 یہ شعر کی دیوی ہے بہروپ تو دھارے گی

    یہ شعر کی دیوی ہے بہروپ تو دھارے گی
    باہر سے اجاڑے گی اندر سے سنوارے گی
    جب ٹوٹ گئے سمبندھ ،پھر کونسے رشتے سے
    میں کس کو صدا دوں گا تو کس کو پکارے گی
    بوچھاڑ یہ بارش کی گذرے ہوے لمحوں کو
    کھڑکی سے دریچے سے ،کمرے میں اتارے گی
    کیا ہوش نہ آئے گا اس بحر تلاطم میں
    جذبوں کی یہ طغیانی کیا جان سے مارے گی
    لگتا ہے مجھے ساجد معصوم انا میری
    جس روز بھی ہارے گی اپنوں ہی سے ہارے گی
    ***

    2gvsho3 - یہ شعر کی دیوی ہے بہروپ تو دھارے گی

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: یہ شعر کی دیوی ہے بہروپ تو دھارے گی

    2gvsho3 - یہ شعر کی دیوی ہے بہروپ تو دھارے گی

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •