Results 1 to 2 of 2

Thread: شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,670
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5874
    Rep Power
    214777

    New5555 شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

    شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا
    آنکھیں مری بھیگی ہوئی چہرہ ترا اترا ہوا

    اب ان دنوں میری غزل خوشبو کی اک تصویر ہے
    ہر لفظ غنچے کی طرح کھل کر تارا چہرہ ہوا

    شاید اسے بھی لے گئے اچھی دنوں کے قافلے
    اس باغ میں اک پھول تھا تری طرح ہنستا ہوا

    ہر چیز ہے بازار میں اس ہاتھ دے اس ہاتھ لے
    عزت گئی شہرت ملے رسوا ہوئے چرچا ہوا

    مندر گئے مسجد گئے پیروں فقیروں سے ملے
    اک اس کو پانے لے لیے کیا کیا کیا ،کیا کیا ہوا

    انمول موتی پیار کے دنیا چار کر لے گئی
    دل کی حویلی کا کوئی دروازہ تھا ٹوٹا ہوا

    برسات میں دیوار و در کی ساری تحریریں مٹیں
    دھویا بہت مٹتا نہیں تقدیر کا لکھا ہوا

    2gvsho3 - شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    22,670
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5874
    Rep Power
    214777

    Default Re: شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

    2gvsho3 - شبنم کے آنسو پھول پر یہ تو وہی قصہ ہوا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •