Results 1 to 2 of 2

Thread: زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    candel زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات

    زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات
    23104 43106749 - زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات
    محمد دانیال
    ایک اندازہ لگایا گیا ہے کہ ز لزلوں سے اب تک آٹھ کروڑ افراد ہلاک ہوچکے ہیں،اور مالی نقصانات کا تو کوئی حساب ہی نہیں۔سائنسی تحقیق سے پہلے زلزلوںکے بارے میں عجیب وغریب نظریات رائج تھے۔ آج ان خیالات میں سے کچھ کے متعلق آپ کو دلچسپ معلومات بتاتے ہیں۔قدیم عیسائی پادریوں کا خیال تھا کہ زلزلے خدا کے باغی اور گنہگار انسانوں کے لئے اجتماعی سزا اور تنبیہ ہوتے ہیں۔ بعض قدیم اقوام سمجھتی تھیں کہ مافوق الفطرت قوتوں کے مالک دیوہیکل درندے جو زمین کے اندر رہتے ہیں، زلزلے پیدا کرتے ہیں۔قدیم جاپانیوں کا عقیدہ تھا کہ ایک طویل القامت چھپکلی زمین کو اپنی پشت پر اْٹھائے ہوئے ہے ، اس کے ہلنے سے زلزلے آتے ہیں۔ کچھ ایسا ہی عقیدہ امریکی ریڈ انڈینز کا بھی تھا کہ زمین ایک بہت بڑے کچھوے کی پیٹھ پر رکھی ہوئی ہے اور کچھوے کے حرکت کرنے سے زلزلے آتے ہیں۔سائبیریا کے قدیم باشندے زلزلے کی ذمّہ داری ایک برفانی کتے کے سر تھوپتے تھے، جو ان کے بقول جب اپنے بالوں سے برف جھاڑنے کے لئے جسم کو جھٹکے دیتا ہے تو زمین لرزنے لگتی ہے۔ ہندوئوں کا عقیدہ ہے کہ زمین ایک گائے کے سینگوں پر رکھی ہوئی ہے، جب وہ سینگ تبدیل کرتی ہے تو زلزلے آتے ہیں۔قدیم یونانی فلسفی اور ریاضی داں فیثا غورث کا خیال تھا کہ جب زمین کے اندر مْردے آپس میں لڑتے ہیں تو زلزلے آتے ہیں۔ اس کے برعکس ارسطو کی توجیہہ کسی حد تک سائنسی معلوم ہوتی ہے، وہ کہتا ہے کہ جب زمین کے اندر سے گرم ہوا باہر نکلنے کی کوشش کرتی ہے تو زلزلے پیدا ہوتے ہیں۔ افلاطون کا نظریہ بھی کچھ اسی قسم کا تھا کہ زیرِ زمین تیز ہوائیں زلزلوں کو جنم دیتی ہیں۔تقریباً 70 سال پہلے سائنسدانوں کا خیال تھا کہ زمین ٹھنڈی ہورہی ہے اور اس عمل کے نتیجے میں اس کا غلاف کہیں کہیں چٹخ جاتا ہے، جس سے زلزلے آتے ہیں۔ کچھ دوسرے سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ زمین کے اندرونی حصّے میں آگ کا جہنم دہک رہا ہے اور اس بے پناہ حرارت کی وجہ سے زمین غبارے کی طرح پھیلتی ہے۔ لیکن آج کا سب سے مقبول نظریہ ’’پلیٹ ٹیکٹونکس‘‘ کا ہے جس کی معقولیت کو دنیا بھر کے جیولوجی اور سیسمولوجی کے ماہرین نے تسلیم کرلیا ہے۔ اس نظرئیے کے مطابق زمین کی بالائی پَرت اندرونی طور پر مختلف پلیٹوں میں منقسم ہے۔ جب زمین کے اندر موجود پگھلے ہوئے مادّے جسے جیولوجی کی زبان میں میگما کہتے ہیں، میں کرنٹ پیدا ہوتا ہے تو یہ پلیٹیں بھی اس کے جھٹکے سے یوں متحرک ہوجاتی ہیں جیسے کنویئر بیلٹ پر رکھی ہوئی ہوں، میگما ان پلیٹوں کو کھسکانے میں ایندھن کا کام کرتا ہے۔ یہ پلیٹیں ایک دوسرے کی جانب سرکتی ہیں، اوپر ، نیچے، یا پہلو میں ہوجاتی ہیں یا پھر ان کا درمیانی فاصلہ بڑھ جاتا ہے۔ زلزلہ یا آتش فشانی عمل زیادہ تر ان علاقوں میں رونما ہوتا ہے، جو ان پلیٹوں کے جوڑ(Joint) پر واقع ہیں۔ ٭…٭…٭

    2gvsho3 - زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات

    2gvsho3 - زلزلے کیوں آتے ہیں؟ مضحکہ خیزقدیم تصورات

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •