Results 1 to 2 of 2

Thread: ہیں موسم رنگ کے کتنے گنوائے، میں نہیں گِنتا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5862
    Rep Power
    214774

    New5555 ہیں موسم رنگ کے کتنے گنوائے، میں نہیں گِنتا


    ہیں موسم رنگ کے کتنے گنوائے، میں نہیں گِنتا
    ہوئے کتنے دن اس کوچے سے آئی، میں نہیں گِنتا

    بھلا خود میں کب اپنا ہوں، سو پھر اپنا پرایا کیا
    ہیں کتنے اپنے اور کتنے پرائے میں نہیں گِنتا

    لبوں کے بیچ تھا ہر سانس اک گنتی بچھڑنے کی
    مرے وہ لاکھ بوسے لے کے جائے میں نہیں گِنتا

    وہ میری ذات کی بستی جو تھی میں اب وہاں کب ہوں
    وہاں آباد تھے کِس کِس کے سائے میں نہیں گِنتا


    بھلا یہ غم میں بھولوں گا کہ غم بھی بھول جاتے ہیں
    مرے لمحوں نے کتنے غم بھُلائے میں نہیں گِنتا

    تُو جن یادوں کی خوشبو لے گئی تھی اے صبا مجھ سے
    انہیں تُو موج اندر موج لائے میں نہیں گِنتا

    وہ سارے رشتہ ہائے جاں کے تازہ تھے جو اس پل تک
    تھے سب باشندۂ کہنہ سرائے، میں نہیں گِنتا


    2gvsho3 - ہیں موسم رنگ کے کتنے گنوائے، میں نہیں گِنتا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5862
    Rep Power
    214774

    Default Re: ہیں موسم رنگ کے کتنے گنوائے، میں نہیں گِنتا

    2gvsho3 - ہیں موسم رنگ کے کتنے گنوائے، میں نہیں گِنتا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •