Results 1 to 2 of 2

Thread: پیڑ کو دیمک لگ جائے یا آدم زاد کو غم

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    New5555 پیڑ کو دیمک لگ جائے یا آدم زاد کو غم

    پیڑ کو دیمک لگ جائے یا آدم زاد کو غم
    دونوں ہی کو امجدؔ ہم نے بچتے دیکھا کم

    تاریکی کے ہاتھ پہ بیعت کرنے والوں کا
    سُورج کی بس ایک کِرن سے گھُٹ جاتا ہے دَم

    رنگوں کو کلیوں میں جینا کون سکھاتا ہے!
    شبنم کیسے رُکنا سیکھی! تِتلی کیسے رَم!

    آنکھوں میں یہ پَلنے والے خواب نہ بجھنے پائیں
    دل کے چاند چراغ کی دیکھو، لَو نہ ہو مدّھم

    ہنس پڑتا ہے بہت زیادہ غم میں بھی انساں
    بہت خوشی سے بھی تو آنکھیں ہو جاتی ہیں نم!

    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


    2gvsho3 - پیڑ کو دیمک لگ جائے یا آدم زاد کو غم

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    Default Re: پیڑ کو دیمک لگ جائے یا آدم زاد کو غم

    2gvsho3 - پیڑ کو دیمک لگ جائے یا آدم زاد کو غم

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •