Results 1 to 2 of 2

Thread: سوئے کہاں تھے آنکھوں نے تکیے بھگوئے تھے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 سوئے کہاں تھے آنکھوں نے تکیے بھگوئے تھے

    سوئے کہاں تھے آنکھوں نے تکیے بھگوئے تھے
    ہم بھی کبھی کسی کے لیے خوب روئے تھے

    انگنائی میں کھڑے ہوئے بیری کے پیڑ سے
    وہ لوگ چلتے وقت گلے مل کے روئے تھے

    ہر سال زرد پھولوں کا ایک قافلہ رکا
    اس نے جہاں پہ دھول اٹے پاوں دھوئے تھے

    اس حادثے سے میرا تعلق نہیں کوئی
    میلے میں ایک سال کئی بچے کھوئے تھے

    آنکھوں کی کشتیوں میں سفر کر رہے ہیں وہ
    جن دوستوں نے دل کے سفینے ڈبوئے تھے

    کل رات میں تھا میرے علاوہ کوئی نہ تھا
    شیطان مر گیا تھا فرشتے بھی سوئے تھے
    ***


    2gvsho3 - سوئے کہاں تھے آنکھوں نے تکیے بھگوئے تھے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: سوئے کہاں تھے آنکھوں نے تکیے بھگوئے تھے

    2gvsho3 - سوئے کہاں تھے آنکھوں نے تکیے بھگوئے تھے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •