Results 1 to 2 of 2

Thread: سر میں جب عشق کا سودا نہ رہا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 سر میں جب عشق کا سودا نہ رہا

    سر میں جب عشق کا سودا نہ رہا
    کیا کہیں زیست میں کیا کیا نہ رہا
    اب تو دنیا بھی وہ دنیا نہ رہی
    اب ترا دھیان بھی اُتنا نہ رہا
    قصّۂ شوق سناؤں کس کو
    راز داری کا زمانا نہ رہا
    زندگی جس کی تمنّا میں کٹی
    وہ مرے حال سے بیگانہ رہا
    ڈیرے ڈالے ہیں خزاں نے چوندیس
    گُل تو گُل، باغ میں کانٹا نہ رہا
    دن دہاڑے یہ لہو کی ہولی
    خلق کو خوف خدا کا نہ رہا
    اب تو سو جاؤ ستم کے مارو
    آسماں پر کوئ تارا نہ رہا


    2gvsho3 - سر میں جب عشق کا سودا نہ رہا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: سر میں جب عشق کا سودا نہ رہا

    2gvsho3 - سر میں جب عشق کا سودا نہ رہا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •