Results 1 to 2 of 2

Thread: کہو، کیا جل رہا ہے پھر جہاں میں آشیاں اس کا ؟

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 کہو، کیا جل رہا ہے پھر جہاں میں آشیاں اس کا ؟


    کہو، کیا جل رہا ہے پھر جہاں میں آشیاں اس کا ؟
    نہیں ، جب دل سلگتا ہے تو اٹھتا ہے دھواں اس کا

    بھلا کیوں پھول کی پہچان بنتی ہے مہک اسکی ؟
    سنو ، سورج کی کرنوں سے ہی ملتا ہے نشاں اس کا

    کہو، کیا راہِ الفت میں دل و جاں وار سکتے ہو ؟
    سنو ، دل کی زمیں اس کی نظر کا آسماں اس کا

    بھلا کب دنی پڑتی ہے وضاحت سامنے سب کے ؟
    پتہ جب پوچھتی ہیں آ کے ہم سے دوریاں اس کا

    خطا دونوں کی تھی لیکن سزا کیوں ایک نے پائی؟
    سنو تنہا تھا دل اپنا مگر سارا جہاں اس کا

    سنو ، اس بےوفا کی یاد تو آتی نہیں ہو گی ؟
    سنو ، دل رک سا جاتا ہے جو آتا ہے دھیاں اس کا

    سنو، وہ ہر جگہ جا کر تمہیں بدنام کرتا ہے !
    کہا، یہ جاں سلامت ہے ، رہے جاری بیاں اس کا

    بچھڑ کر کیا کبھی سوچا اسے ملنے کے بارے میں ؟
    سنو، دھرتی کے ہم باسی ، فلک پر ہے مکاں اس کا




    2gvsho3 - کہو، کیا جل رہا ہے پھر جہاں میں آشیاں اس کا ؟

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: کہو، کیا جل رہا ہے پھر جہاں میں آشیاں اس کا ؟

    2gvsho3 - کہو، کیا جل رہا ہے پھر جہاں میں آشیاں اس کا ؟

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •