Results 1 to 2 of 2

Thread: نکل کے حلقۂ شام و سحر سے جائیں کہیں

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 نکل کے حلقۂ شام و سحر سے جائیں کہیں

    نکل کے حلقۂ شام و سحر سے جائیں کہیں
    زمیں کے ساتھ نہ مل جائیں یہ خلائیں کہیں!

    سفر کی رات ہے پچھلی کہانیاں نہ کہو
    رُتوں کے ساتھ پلٹتی ہیں کب ہوائیں کہیں!

    فضا میں تیرتے رہتے ہیں نقش سے کیا کیا
    مجھے تلاش نہ کرتی ہوں یہ بلائیں کہیں!

    ہوا ہے تیز، چراغِ وفا کا ذِکر تو کیا
    طنابیں خیمۂ جاں کی نہ ٹوٹ جائیں کہیں!

    میں اوس بن کے گُلِ حرف پر چمکتا ہوں
    نکلنے والا ہے سُورج، مجھے چھپائیں کہیں!

    مرے وُجود پہ اُتری ہیں لفظ کی صورت
    بھٹک رہی تھیں خلاؤں میں یہ صدائیں کہیں

    ہَوا کا لمس ہے پاؤں میں بیڑیوں کی طرح
    شفق کی آنچ سے آنکھیں پگھل نہ جائیں کہیں!

    رُکا ہوا ہے ستاروں کا کارواں امجدؔ
    چراغ اپنے لہو سے ہی اَب جلائیں کہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


    2gvsho3 - نکل کے حلقۂ شام و سحر سے جائیں کہیں

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: نکل کے حلقۂ شام و سحر سے جائیں کہیں

    2gvsho3 - نکل کے حلقۂ شام و سحر سے جائیں کہیں

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •