Results 1 to 2 of 2

Thread: دل نے پھر غم کا راگ چھیڑا ہے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,188
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    New5555 دل نے پھر غم کا راگ چھیڑا ہے

    دل نے پھر غم کا راگ چھیڑا ہے
    کیا کوئی تار اسکا ٹوٹا ہے؟

    چاند کو دیکھ کر کبھی سوچا؟
    ہاں، یہ اپنی طرح سے تنہا ہے

    پھر پکارا ہے پیار سے کس نے؟
    آپ نے دن میں خواب دیکھا ہے

    اس نے وعدہ کیا تھا ، آیا وہ ؟
    سانحہ سا یہی تو گزرا ہے

    پہلے ساگر میں آنکھ تھی اور اب؟
    اب تو ساگر اسی میں رہتا ہے

    تم نے منزل گنوا کے کچھ پایا؟
    خوف، جو راستوں سے آتا ہے

    بھولنے والے کو بھلا ڈالو
    با رہا ہم نے ایسا چاہا ہے

    دل جو ٹوٹا تو کیا گماں گزرا ؟
    کرچیاں بن کے بھی دھڑکتا ہے

    وصل آنکھوں سے کب مٹا بولو ؟
    ہجر اِن میں کبھی کا ٹھہرا ہے



    2gvsho3 - دل نے پھر غم کا راگ چھیڑا ہے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,188
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    Default Re: دل نے پھر غم کا راگ چھیڑا ہے

    2gvsho3 - دل نے پھر غم کا راگ چھیڑا ہے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •