Results 1 to 2 of 2

Thread: اوروں کا تھا بیان تو موجِ صدا رہے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 اوروں کا تھا بیان تو موجِ صدا رہے


    اوروں کا تھا بیان تو موجِ صدا رہے
    خود عمر بھر اسیرِ لبِ مدعا رہے
    مثلِ حباب بحرِ غمِ حادثات میں
    ہم زیرِ بارِ منتِ آب و ہَوا رہے
    میں اُس سے اپنی بات کا مانگوں اگر جواب
    لہروں کا پیچ و خم وہ کھڑا دیکھتا رہے

    ق

    گلشن میں تھے تو رونقِ رنگِ چمن بنے
    جنگل میں ہم امانتِ بادِ صبا رہے
    سُرخی بنے تو خونِ شہیداں کا رنگ تھے
    روشن ہوئے تو مشعلِ راہِ وفا رہے
    اُبھرے تو ہر بھنور کا جگر چاک کر گئے
    ٹھہرے تو موج موج کو اپنا بنا رہے
    امجدؔ درِ نگار پہ دستک ہی دیجئے
    اس بے کراں سکوت میں کچھ غلغلہ رہے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔



    2gvsho3 - اوروں کا تھا بیان تو موجِ صدا رہے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: اوروں کا تھا بیان تو موجِ صدا رہے

    2gvsho3 - اوروں کا تھا بیان تو موجِ صدا رہے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •