Results 1 to 2 of 2

Thread: جب کبھی ان کی توجہ میں کمی پائی گئی

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 جب کبھی ان کی توجہ میں کمی پائی گئی


    غزل


    جب کبھی ان کی توجہ میں کمی پائی گئی
    از سرِ نو داستانِ شوق دہرائی گئی

    بک گئے جب تیرے لب پھر تجھ کو کیا شکوہ اگر
    زندگانی بادہ و ساغر سے بہلائی گئی

    اے غمِ دنیا! تجھے کیا علم تیرے واسطے
    کن بہانوں سے طبعیت راہ پر لائی گئی

    ہم کریں ترکِ وفا اچھا چلو یوں ہی سہی
    اور اگر ترکِ وفا سے بھی نہ رسوائی گئی

    کیسے کیسے چشم و عارض گردِ غم سے بجھ گئے
    کیسے کیسے پیکروں کی شانِ زیبائی گئی

    دل کی دھڑکن میں توازن آ چلا ہے خیر ہو
    میری نظریں بجھ گئیں یا تیری رعنائی گئی

    اُن کا غم ، اُن کا تصور ان کے شکوے اب کہاں
    اب تو یہ باتیں بھی اے دل ہو گئیں آئی گئیں

    جرأت انساں پہ گو تادیب کے پہرے رہے
    فطرتِ انساں کو کب زنجیر پہنائی گئی

    عرصۂ ہستی میں اب تیشہ زنوں کا دور ہے
    رسمِ چنگیزی اُٹھی، توقیر دارائی گئی!

    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔



    2gvsho3 - جب کبھی ان کی توجہ میں کمی پائی گئی

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: جب کبھی ان کی توجہ میں کمی پائی گئی

    2gvsho3 - جب کبھی ان کی توجہ میں کمی پائی گئی

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •