Results 1 to 2 of 2

Thread: بشرطِ استواری

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    New5555 بشرطِ استواری



    بشرطِ استواری

    خونِ جمہور میں بھیگے ہوئے پرچم لے کر
    مجھ سے افراد کی شاہی نے وفا مانگی ہے
    صبح کے نور پہ تعزیر لگانے کے لیے
    شب کی سنگین سیاہی نے وفا مانگی ہے
    اور یہ چاہا ہے کہ میں قافلۂ آدم کو
    ٹوکنے والی نگاہوں کا مددگار بنوں!
    جس تصور سے چراغاں ہے سر جادۂ زیست
    اس تصور کی ہزیمت کا گنہگار بنوں!
    ظلم پروردہ قوانین کے ایوانوں سے
    بیڑیاں تکتی ہیں زنجیر صدا دیتی ہے
    طاقِ تادیب سے انصاب کے بت گھورتے ہیں
    مسندِ عدل سے شمشیر صدا دیتی ہے
    لیکن اے عظمتِ انساں کے سنہرے خوابو
    میں کسی تاج کی سطوت کا پرستار نہیں
    میرے افکار کا عنوانِ ارادت تم ہو
    میں تمہارا ہوں لٹیروں کا وفادار نہیں
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


    2gvsho3 - بشرطِ استواری

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    20,240
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5861
    Rep Power
    214774

    Default Re: بشرطِ استواری

    2gvsho3 - بشرطِ استواری

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •