Results 1 to 2 of 2

Thread: امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں


    امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں
    ذرا سی دیر کو دنیا سے کٹ کے دیکھتے ہیں

    بکھر چکے ہیں بہت باغ و دشت و دریا
    اب اپنے حجرہ جاں میں سمٹ کے دیکھتے ہیں

    تمام خانہ بدوشوں مین مشترک ہے یہ بات
    سب اپنے گھروں کو پلٹ کے دیکھتے ہیں

    پھر اس کے بعد جو ہونا ہے ہو رہے سر دست
    بساط َ عافیت ِ جاں الٹ کے دیکھتے ہیں

    وہی ہے خواب جسے مل کے سب نے دیکھا تھا
    اب اپنے اپنے قبیلوں میں بٹ کے دیکھتے ہیں

    سنا ہے کہ سبک ہو چلی ہے قیمت حرف
    سو ہم بھی اب قد و قامت میں گھٹ کے دیکھتے ہیں
    ٭٭٭



    2gvsho3 - امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں

    2gvsho3 - امید و بیم کے محور سے ہٹ کے دیکھتے ہیں

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •