Results 1 to 2 of 2

Thread: پھر جدائی، پھر جئے، پھر مر چلے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 پھر جدائی، پھر جئے، پھر مر چلے

    پھر جدائی، پھر جئے، پھر مر چلے
    ہم بھی کیا کیا منزلیں سر کر چلے

    دامنِ ملبوس خالی کر چلے
    لیکن اپنے دل کی جھولی بھر چلے

    بڑھ رہی ہیں خواہشیں دل کی طرف
    جیسے حملے کے لیے لشکر چلے

    انتظار اور انتظار اور انتظار
    کیسے کیسے مرحلے سر کر چلے

    زندگی ساری گزاری اس طرح
    جس طرح رسی پہ بازی گر چلے

    وہ مَسل دے یا اٹھا کر چوم لے
    پھول اس دہلیز پر ہم دھر چلے

    ہے کوئی ایسا مرے جیسا عدیم
    اپنے دل کو مار کر ٹھوکر چلے

    چال اس کی موچ سے بدلی عدیم
    سب حسیں ہلکا سا لنگڑا کر چلے

    تند خُو کا وہ رویہ تھا عدیم
    دل پہ جیسے کند سا خنجر چلے


    تر بہ تر اے چشم تجھ کو کر چلے
    کم سے کم تیرا تو دامن بھر چلے

    ساتھ اپنے کچھ نہیں لے کر چلے
    سب یہاں کا تھا، یہیں پر دھر چلے

    ہوتے ہوتے اور ہی کچھ ہو گیا
    کرتے کرتے اور ہی کچھ کر چلے

    رہ گیا باقی چراغوں کا دھواں
    لوگ اٹھ کر اپنے اپنے گھر چلے

    پانچویں تو سمت ہی کوئی نہیں
    تِیر چاروں سمت سے دل پر چلے

    پانچویں سمت اس گھڑی ہم پر کھلی
    جس گھڑی ہم خاک کے اندر چلے

    اک وفا رسمِ وفا ہوتی نہیں
    رسم وہ ہوتی ہے جو گھر گھر چلے

    یہ زمیں اس وقت تک موجود ہے
    اِس زمین کا جب تلک چکر چلے

    آخری لمحے لگا ایسے عدیم
    جیسے ہم رک جائیں اور منظر چلے

    خاک تھی دنیا کی جھولی میں عدیم
    خاک سے ہم اپنا دامن بھر چلے


    2gvsho3 - پھر جدائی، پھر جئے، پھر مر چلے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: پھر جدائی، پھر جئے، پھر مر چلے

    2gvsho3 - پھر جدائی، پھر جئے، پھر مر چلے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •