Results 1 to 2 of 2

Thread: تُم سے کُچھ نہیں کہنا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 تُم سے کُچھ نہیں کہنا


    تُم سے کُچھ نہیں کہنا




    ہم نے سوچ رکھا ہے

    چاہے دل کی ہر خواہش

    زندگی کی آنکھوں سے اشک بن کے

    بہہ جائے

    چاہے اب مکینوں پر

    گھر کی ساری دیواریں چھت سمیت گِر جائیں

    اور بے مقّدر ہم

    اس بدن کے ملبے میں خُود ہی کیوں نہ دَب جائیں

    تم سے کُچھ نہیں کہنا

    کیسی نیند تھی اپنی ، کیسے خواب تھے اپنے

    اور اب گلابوں پر

    نیند والی آنکھوں پر

    نرم خُو سے خوابوں پر

    کیوں عذاب ٹوٹے ہیں

    تم سے کچھ نہیں کہنا

    گھِر گئے ہیں راتوں میں

    بے لباس باتوں میں

    اِس طرح کی راتوں میں

    کب چراغ جلتے ہیں، کب عذاب ملِتے ہیں

    اب تو اِن عذابوں سے بچ کے بھی نکلنے کا راستہ نہیں جاناں!

    جس طرح تمھیں سچ کے لازوال لمحوں سے واسطہ نہیں جاناں

    ہم نے سوچ رکھا تُم سے کُچھ نہیں کہنا

    2gvsho3 - تُم سے کُچھ نہیں کہنا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: تُم سے کُچھ نہیں کہنا

    2gvsho3 - تُم سے کُچھ نہیں کہنا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •