Results 1 to 2 of 2

Thread: یہ غزل کِس کی ہے اس مطلع کو پڑھ کر دیکھو

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 یہ غزل کِس کی ہے اس مطلع کو پڑھ کر دیکھو


    یہ غزل کِس کی ہے اس مطلع کو پڑھ کر دیکھو
    چاند کی چودھویں تاریخ ہے ، اوپر دیکھو

    آج کمرے میں نہیں بیٹھنے والا موسم
    برف کھڑکی سے نہیں ،گھر سے نکل کر دیکھو

    رات سوئی ہوئی رعنائیوں نے مجھ سے کہا
    ہم کو ہاتھوں سے نہیں، آنکھوں سے چھُو کر دیکھو

    چاند کی زلفیں ہیں، چہرہ ہے، قد و قامت ہے
    آسمانوں سے حویلی میں اُتر کر دیکھو

    ہم غریبوں سے کبھی ٹوٹ کے ملنے آؤ
    کیا بکھر نے میں مزا ہے یہ بکھر کر دیکھو
    ***



    2gvsho3 - یہ غزل کِس کی ہے اس مطلع کو پڑھ کر دیکھو

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: یہ غزل کِس کی ہے اس مطلع کو پڑھ کر دیکھو

    2gvsho3 - یہ غزل کِس کی ہے اس مطلع کو پڑھ کر دیکھو

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •