Results 1 to 2 of 2

Thread: زمیں پہ جب کسی نئے وجُود نے جنم لیا

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 زمیں پہ جب کسی نئے وجُود نے جنم لیا



    زمیں پہ جب کسی نئے وجُود نے جنم لیا
    (عالمی یومِ اطفال)
    زمیں پہ جب کسی نئے وجود نے جنم لیا
    یقین ا گیا
    خدا ابھی بشر سے بدگماں نہیں
    مگر نئی کلی کا رنگ دیکھ کر
    یہ واہمہ بھی جاگ اُٹھا
    خدا بہار سے خفا ہے کیا؟
    خدا خفا ہو یا نہ ہو
    ہَوا ضرور بدگمان ہے!
    یہ زرد رُو،دریدہ جاں
    یہ پور پور استخواں
    اماوسوں کی رات میں نہ لوریاں ،نہ پالنا
    خزاں کے ہاتھ بچ سکیں نہ شوخیاں نہ بچپنا
    نہ ان کا ذہن آگہی کے لمس کا شریک ہے
    نہ ان کی آنکھ روشنی کے ذائقے سے آشنا!
    ضِدوں کا وقت اور خود کو روکنا
    شرارتوں کی عُمر اور سوچنا!
    یہ سراُٹھائیں کیا،انھیں کسی پہ مان ہی نہیں
    کسی کا پیار ان کے حوصلوں کی جان ہی نہیں
    ہَوائیں خوشبوؤں کے تحفے دلدلوں کے پار لے گئیں
    گھٹائیں بارشوں کے سب سندیس ندیوں کو دے گئیں
    غزال اب بھی تشنہ کام ہی رہے
    ہَوا سے صرف نامہ و پیام ہی رہے
    وہی ہے تشنگی،وہی رُتوں کی کم نگاہیاں
    وہی اکیلا پن،وہی سمے کی کج ادائیاں
    ہَوا میں طائرانِ آہنی کا وصل(اگرچہ)خُوب ہے
    (خلا سے لے کر چاند تک زمیں کہاں غروب ہے؟)
    مگر زمیں کے اپنے چاند،آج بھی گہن میں ہیں
    جبیں کے داغ کیا دھُلیں ،سیاہیاں کرن میں ہیں
    صبا نفس حیات کا جمال بے نمو رہا!
    ہوا گزیدہ پھُول کا لباس بے رفو رہا
    ہمکتے کھِلکھلاتے بچے اب خیال و خواب ہو گئے
    ہمارے اگلے
    اپنی بے بضاعتی میں کیا عذاب گئے
    یہ شب نصیب
    جن کو بھُوک نے جنم دیا ہے
    تشنگی نے دیکھ بھال کی
    یہ کھوکھلی جڑیں
    نئی رُتوں میں شاخسارِجاں کو
    کیسی کونپلیں عطا کریں گی؟
    (کرسکیں گی؟۔۔یہ بھی سوچنے کی بات ہے)
    شدید موسموں پہ پلنے والے پیڑ
    کتنے اُونچے جائیں گے؟
    یہ بے ثمر درخت
    اپنی چھاؤں کتنی دُور لائیں گے؟
    جڑوں کی بانجھ کوکھ میں نہ رنگ ہے ،نہ رُوپ ہے
    نظر کی آخری حدوں تلک
    فضا میں صرف دھُوپ ہے!
    نوادرات ،سیم و زر،گئے زمانوں کی کہانیاں بھی
    محترم ہیں
    ان کو جمع کرنا نیک کام ہے
    مگر یہ بچے زندگی ہیں
    میوزیم کے افسران زندگی جمع کریں
    اِسے پناہ دیں !
    اسے نمود دیں !
    اسے غرور دیں !
    یہ بے اماں ۔۔یہ بے مکاں
    یہ کم لباس، کم زباں
    انھیں بھی راستوں میں نرم چھاؤں کی نوید ہو
    ہرے بھرے لباس میں کبھی تو ان کی عید ہو


    2gvsho3 - زمیں پہ جب کسی نئے وجُود نے جنم لیا

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: زمیں پہ جب کسی نئے وجُود نے جنم لیا

    2gvsho3 - زمیں پہ جب کسی نئے وجُود نے جنم لیا

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •