Results 1 to 2 of 2

Thread: اپنے ہی دست و پا مرے اپنے رقیب ہو گئے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default اپنے ہی دست و پا مرے اپنے رقیب ہو گئے


    اپنے ہی دست و پا مرے اپنے رقیب ہو گئے
    تیرے بغیر پھیل کر بازو صلیب ہو گئے

    کوئی ہنسا تو رو پڑے رویا تو مسکرا دیئے
    اب کے تیری جدائی میں ہم تو عجیب ہو گئے

    آج بھی دیکھ دیکھ کر وعدے کا دن گزر گیا
    آج بھی پھیل پھیل کر سائے مہیب ہو گئے

    لوح جبیں پہ جس طرح لکھی گئیں مسافتیں
    اتنا چلے کہ راستے اپنا نصیب ہو گئے

    شدت غم کو دیکھ کر غم کو بھی رحم آ گیا
    وہ جو کبھی رقیب تھے وہ بھی حبیب ہو گئے

    اس کی رفاقتوں سے ہم کتنے امیر تھے عدیم
    وہ جو بچھڑ گیا تو ہم کتنے غریب ہو گئے




    2gvsho3 - اپنے ہی دست و پا مرے اپنے رقیب ہو گئے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: اپنے ہی دست و پا مرے اپنے رقیب ہو گئے

    2gvsho3 - اپنے ہی دست و پا مرے اپنے رقیب ہو گئے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •