Results 1 to 2 of 2

Thread: بدن کی سرزمین پر تو حکمران اور ہے

  1. #1
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    New5555 بدن کی سرزمین پر تو حکمران اور ہے


    بدن کی سرزمین پر تو حکمران اور ہے

    مگر جو دل میں بس رہا ہے مہربان اور ہے

    جو مُجھ سے منسلک ہُوئیں کہانیاں کُچھ اور تھیں

    جو دِل کو پیش آئی ہے وہ داستان اور ہے

    یہ مرحلہ تو سہل تھا محبتوں میں وصل کا

    ابھی تمہیں خبر نہیں کہ امتحان اور ہے

    وہ دن کدھر گئے مِرے وہ رات کیا ہوئی مِری

    یہ سرزمین نہیں ہے وہ یہ آسمان اور ہے

    وہ جس کو دیکھتے ہو تم ضرورتوں کی بات ہے

    جو شاعری میں ہے کہیں وہ خُوش بیان اور ہے

    جو سائے کی طرح سے ہے وہ سایہ دار بھی تو ہے

    مگر ہمیں ملا ہے جو وہ سائبان اور ہے

    2gvsho3 - بدن کی سرزمین پر تو حکمران اور ہے

  2. #2
    Join Date
    Nov 2014
    Location
    Lahore,Pakistan
    Posts
    25,270
    Mentioned
    1562 Post(s)
    Tagged
    20 Thread(s)
    Thanked
    5876
    Rep Power
    214780

    Default Re: بدن کی سرزمین پر تو حکمران اور ہے

    2gvsho3 - بدن کی سرزمین پر تو حکمران اور ہے

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •